نارتھ کراچی میں کارکن کے قتل کی سخت مزمت کرتے ہیں: ایم کیو ایم زونل انچارج حیدرآباد

حیدرآباد: متحدہ قومی موومنٹ حیدرآباد کے زونل انچارج نویدشمسی و اراکین زونل کمیٹی نے نارتھ کراچی میں مسلح دہشت گردوں کی فائرنگ سے ایم کیو ایم نارتھ ناظم آباد سیکٹر یونٹ 173 کے کارکن عطر حسین رضوی کے بہیمانہ قتل کی سخت ترین الفاظ میں مذمت کی ، اپنے مشترکہ مذمتی بیان کہا کہ کراچی میں جاری ٹارگٹڈ آپریشن کے باوجود ایم کیو ایم کے بے گناہ کارکنان کاقتل عام جاری ہے اور حکومت خاموش تماشائی بنی ہوئی ہے دہشت گرد کھلے عام معصوم انسانوں کا خون خاک میں ملارہے ہیں ان دہشت گردوں کو گرفتار کیو ں نہیں کیا گیا،تسلسل کے ساتھ ایم کیو ایم کے کارکنوں کو دہشت گردی کا نشانہ بنائے جانے پرحکومت اورقانون نافذ کرنے والے ریاستی اداروں کی خاموشی نے عوام کے ذہنوں میں کئی سوال پیدا کردیئے ہیں۔انھوں نے کہا کہ باطل قوتوں کی جامع منصوبہ بند ی کے تحت کراچی شہر میں دہشت گردوں کا لوگوں کو چن چن کر قتل کرنا شہر میں فرقہ وارانہ فسادات کی آگ کو بھڑ کانے کی سازش ہے اور کراچی کے عوام کو شیعہ ،سنی فسادات کی آگ میں دھکیلنے کیلئے قتل و غارتگری کا بازار گرم کیا جارہا ہے یہ لمحہ فکرہے اب بھی ان مسلح دہشت گردوں کو گرفتار نہیں کیا گیا تو شہردہشت گردوں کی پناہ گاہ بنا رہے گا ۔انہوں نے کہا کہ ماضی کی طرح کراچی کے عوام کو شیعہ و سنی کی بنیاد پر تقسیم کر کے آپس میں لڑائے جا نے کی سازش ہے اور ایم کیو ایم کے کارکنان کا قتل عام اسی سازش کا حصہ ہے ایسا محسوس ہوتا ہے کہ مسلح دہشت گردوںکو کھلی چھوٹ دے دی گئی ہے ۔انہوں نے کہا کہ حکومت سندھ کراچی میں ٹارگٹڈ آپریشن کی کامیابی کے دعوئے توکررہی ہے لیکن ایم کیو ایم کے کارکنان کے قتل و غارتگری پر کوئی ایکشن کیوں نہیں لیتی ہے جبکہ عوام کے جان و مال کے تحفظ کی ذمہ داری حکومت و ریاستی اداروں پر عائد ہوتی ہے۔