قدرتی وسائل کا استعمال اور تحفظ جنگی بنیادوں کرنا ہوگا:کمشنرکراچی

کراچی: کمشنر کراچی شعیب احمد صدیقی نے کہا ہے کہ آئیندہ نسلو ں کے محفوظ مستقبل کیلئے قدرتی وسائل کا استعمال اور تحفظ جنگی بنیا دو ں پر کر نا ہو گا اگر قدرتی وسائل کا تحفظ نہیں کیا گیا تو اس کا خمیا زہ آنے والی نسلوں کو بھگتنا ہو گا ۔ان خیالا ت کا اظہا ر انھوں نے آج عالمی ارتھ آورکے حوالے سے منعقدہ مختلف تقاریب میں مہما ن خصوصی کی حیثیت سے اپنے خطا ب میں کیا۔ تقاریب میں مختلف ما ہرین نے بھی خطا ب کیا جبکہ ڈائر یکٹر میڈیا کمشنر کراچی محمد شبیہ صدیقی بھی ان کے ہمراہ تھے ۔کمشنر کرا چی نے اپنے خطا ب میں کہا کہ مستقبل کی نسلو ں کو محفوظ دھر تی کی منتقلی کیلئے تر جیحی بنیا دوں پر اقداما ت نا گزیر ہیں ۔پا نی اور گیس سمیت دیگر قدرتی وسائل کو احتیا ط سے استعمال کر کے آئیندہ کی نسلو ں کے مستقبل کو محفوظ اور بہتر بنا یا جا سکتا ہے انھو ں نے کہا کہ گیس ۔پانی اور قدرتی وسائل کا غیر ضروری استعمال اور ضیا ع اسی طرح جا ری رہا تومستقبل قریب میں پر یشانیوں کو سامنہ اٹھا نا پڑے گا۔ سندھ اسمبلی کے ارتھ آورکی قرا ر دار کی منظوری کے دور رس مثبت نتائیج حاصل ہو نگے ۔شعیب احمد صدیقی نے کہا کہ شہر میں محدود ٹریٹمنٹ سہو لیا ت کے با عث فضلہ جا ت میں اضافہ ،صنعتی فضلے کا بڑھتاہو اخراج اور میو نسپل ویسٹ نے زمین او رپا نی کو آلو دہ کر دیا ہے جس کی وجہ سے انسانی صحت کو مستقل خطرات کا سامناہے ،کمشنر کراچی نے اپنے خطاب کے مو قع پر کہا کہ ایک رپورٹ کے مطابق کرا چی میں فضائی آلو دگی میں اضافے کی 90 فیصد وجوہا ت میں پر انی ،زائد المیعاد اورخراب ٹرا نسپورٹ کا استعمال اور فیکٹریوں کی چمنیو ں سے نکلنے والا غیر محفوظ دھواں ہے ۔گاڑیوں سے کا ربن مو نو آکسائیڈ اور کا ربن ڈائی آکسائیڈ خارج ہو کر نا ک ،گلے اور آنکھوں کی بیما ریوں کا سبب بن رہا ہے ۔شہر کے ما حول کو بہتر بنانے کیلئے درخت بہت اہم کردار ادا کرسکتے ہیںشجر کا ری کی مہم کو با ر با ر کرنے کی ضرورت ہے ۔گرین ما حول کیلئے شہر میں مزید پا رکوں کے قیا م اور درخت لگانے کی ضرورت ہے ہر گھر میں درخت لگاکر شہر کو گرین اور ما حول کو کلین بنا یا جا سکتاہے، صنعتی علا قوں میں خالی گرین بیلٹ میں درخت اور پو دے لگاکر ما حولیاتی آلو دگی کو کم کیا جا سکتا ہے۔