امتحانات میں نقل کو روکنے کے لیے مربوط حکمت عملی اپنائی جائے : ڈپٹی کمشنر حیدر آباد

حیدرآباد: ڈپٹی کمشنر عمرکوٹ ندیم الرحمن میمن نے کہا ہے کہ انٹر میڈیٹ (گیارہویں اور بارہویں) جماعت کے 22 اپریل سے شروع ہونے والے امتحانات میں نقل کو روکنے کے لیے مربوط حکمت عملی بنائی جائے ۔ یہ بات ڈپٹی کمشنر عمرکوٹ ندیم الرحمن میمن نے ڈی سی سکیٹریٹ میںمنعقد کردہ ایک اعلی سطحی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہی، اجلاس میںچاروں تعلقوں کے اسسٹنیٹ کمشنر، ڈی او ایجوکیشن غلام مصفطی سومرو ، انفاررمیشن آفیسر شہزاد احمد شیخ ، گرلس اور بوائیز کالیج کے پرنسپل ، مختیار کار ، میر پورخاص بورڈ کے نمائندے، اور پولیس کے نمائندے نے اجلاس میں شرکت کی ، اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ نقل کی روک تھام کے لیے ہم تمام لوگوں کو اپنی ذمہ داری نبھانی ہوگی ، امتحانات میں نقل کی وجہ سے ہمارے صوبے کی بھی بدنامی ہو رہی ہے اور طالب علموں کا مستقبل بھی خطرے میں پڑ گیا ہے ۔ اس سلسلے میں ہمیں موثر حکمت عملی کی ضرورت ہے ، انھوں نے ہدایت کی کہ ضلع عمرکوٹ کے تمام امتحانی سینٹروں پر موبائل فون اور کوئی بھی مواد لانے کی اجازت نہیں ہوگی ، انھوں نے کہا کہ 22 اپریل سے 08 مئی 2014 تک دفعہ 144 نافذ کر کے غیر متعلقہ شخص امتحانی مرکز میں داخلے پر پابندی عائد کی ہے اور ضلع کی تمام فوٹو اسٹیٹ مشینوں کی دوکانیں امتحانی اوقات میں کھولنے پر پابندی عائد کی ہے جبکہ خلاف ورزی کرنے والوںکے خلاف فوری جرمانہ اور قانونی کارروائی کی جائے گی ، اس موقع پر انھوں نے اجلاس میں شریک چاروں تعلقوں کے اسسٹنٹ کمشنروں کو ہدایت کی امتحانی سینٹروں پر مختلف اوقات میں دورہ کریں، انھوں نے مزید کہا کہ کوئی بھی ادارہ اور میڈیا سے منسلک لوگ ڈپٹی کمشنر کی اجازت نامے کے بغیر امتحانی سینٹر کے اندر داخلے پر پابندی ہے ۔