موجودہ حکمران قوت ارادی وفیصلہ سے محروم ہےں: صاحبزادہ ابوالخیر محمد زبیر

حیدرآباد: جمعیت علماءپاکستان کے صدر ڈاکٹر صاحبزادہ ابوالخیر محمد زبیرنے کہاہے کہ موجودہ حکمراں قوت ارادی و قوت فیصلہ سے محروم ہیں جس کے باعث ملک کے حالات دن بدن بد سے بدتر ہوتے جارہے ہیں اور ملک کی باگ ڈور حکمرانوں کے ہاتھ سے نکلتی ہوئی نظر آرہی ہے۔ جمعیت علماءپاکستان کے صدر ڈاکٹر صاحبزادہ ابوالخیر محمد زبیرنے کہا کہ کہ حکومت طالبان کا معاملہ ہویا حامد میر پر قاتلانہ حملے کا سنگین مسلہ ہو کبھی سیاسی قیادت ،میڈیا اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کو ایک صفحے پر نہیں لاسکی، حامد میر کے سانحہ پر وزیر اطلاعات میڈیا کے حق میں بیان دے رہے تھے جبکہ وزیرداخلہ اس کے خلاف بیان دے رہے تھے ،وزیر اعظم حامد میر کی عیادت کر کے جیو سے ہمدردی کا اظہار کررہے تھے دوسری جانب وزیر دفاع جیوکو ملک دشمن قرار دے کر پیمرا سے ان کے خلاف کارروائی کے لیے نوٹس بھجوارہے تھے ،حکمرانوں کی اس منافقانہ پالیسی نے ملک کو ایک سخت ترین بحران سے دوچار کردیا ہے اور 1999ءجیسی صورت حال دوبارہ پیدا کردی ہے،انھوں نے کہا کہ اب بھی وقت ہے کہ حکمراں ہوش کے ناخن لیں اور تمام اہم معاملات میں فوج کو اعتماد میں لے کر بالخصوص حامد میر کے سانحہ کے سلسلے میں میڈیا اور عسکری اداروں کے درمیان جو تلخیاں پیدا ہوگئی ہیں اس کو فوری ختم کرنے کی کوشش کریں اس تنازعہ سے پوری دنیا میںملک کا وقار خاک میں مل رہا ہے جس کا حکمرانوں کو کوئی احساس نہیں ہے ۔