جسٹس نانواتی کمیشن نے گودھرا فسادات کی رپورٹ جمع کرادی

احمدآباد:جسٹس نانواتی کمیشن نے بارہ سال قبل گجرات میں مسلمانوں کو زندہ جلائے جانے کی رپورٹ گجرات کے وزیراعلیٰ آنندیبن پٹیل کے حوالے کردی۔ جسٹس نانواتی نے کہا کہ حتمی رپورٹ تیار ہے اسے کچھ دنوں میںجمع کرادیا جائے گا۔ نانواتی کمیشن نے رپورٹ کی تیاری میں 24مرتبہ توسیع کی تھی جبکہ آخری بار 31اکتوبر کواضافی وقت لیا گیاتھا۔کمیشن میں جسٹس نانواتی کے علاوہ اکشے مہتا شامل تھے۔ 2008میں انکوائرپینل نے گودھرا فسادات کے حوالے سے ایک رپورٹ جمع کرادی تھی جس میں واضح کیا گیا تھا کہ ریل کو جلانے کا واقعہ ایک منصوبہ بندی کے مطابق کیا گیا تھا۔27فروری2002کو مسلمانوں کو زندہ جلادیے جانے پرپورے بھارت میں فسادات برپاہوگئے تھے جس کے بعد3مارچ 2002کو گجرات حکومت نے ایک کمیشن قائم کیا جس میں جسٹس کے جی شاہ بھی شامل تھے،2008میں جسٹس شاہ کی وفات کے بعد اکشے مہتا کو کمیشن کا حصہ بنایاگیاتھا۔رپورٹ کے مندرجات کوابھی تک عام نہیں کیا گیا ہے۔