سر آئیون کی ہمپٹز تقریب دھمکی آمیز رویے کو پاش پاش کرتے ہوئے

نیو یارک، 4 اگست 2015ء/پی آرنیوزوائر– ریکارڈنگ آرٹسٹ سر آئیون اپنے تازہ ترین بل بورڈ ہٹ گانے کس آل دی بلیز گڈبائےکی کامیابی کا جشن منانے کے لیے سالانہ ہمپٹنز عظیم الشان تقریب کی میزبانی کرے گی، اس گانے کو پال اوکن فولڈ نے پیش کیا جبکہ اس میں ٹیلر ڈین بھی شامل تھیں۔ تقریب جسے سر آئیون کا رائل ٹی ڈانس کہا جاتا ہے 22 اگست بروز ہفتہ سر آئیونز کاسل میں ہوگی اور نیو یارک کے مشہور نائٹ کلب اسٹوڈیو 54 کے ماحول کو دوبارہ تخلیق کرے گی جہاں ہر رات ایل جی بی ٹی اور جنس مخالف کی طرف راغب دونوں افراد اتحاد و اتفاق سے رقص کرتے ہیں۔ اس خصوصی موقع پر کاسل قوس قزح کے رنگوں کی ایل ای ڈی روشنیوں سے منور ہوگا، جیسا کہ وائٹ ہاؤس ہوا تھا جب ہم جنس پرستوں کی شادی کو قانونی حیثیت دی گئی تھی۔ مہمان ولیج پیپل گروپ کے افراد میں سے کسی ایک کے جیسے ملبوسات پہنیں گے، جو ایک موسیقی گروپ ہے جو تقریب کے موضوع تنوع، قبولیت اور محبت سے بہترین مطابقت رکھتا ہے۔

ہولوکاسٹ میں بچ جانے والے سگی بی ولزگ کی اولاد سر آئیون جانتے ہیں کہ دوسروں کے لیے جارحیت اور عداوت کی لوگوں کے لیے کیا قیمت ہوسکتی ہے اور ساتھ ساتھ اس کےطویل المیعاد کیا ہوسکتے ہیں۔ ان کی پیس مین فاؤنڈیشن بھی اسی لیے قائم ہوئی، 2005ء میں، جو تمام امتیازات کے خلاف جنگ ، بالخصوص ایل جی بی ٹی نوجوانوں کی مدد کررہا ہے جو حملوں اور دھمکی آمیز رویے سے متاثر ہوئے ہیں۔ سر آئیون اور ان کی پیس مین فاؤنڈیشن دھمکی آمیز رویے کے خلاف خیراتی اداروں کو 200,000 ڈالرز سے زیادہ کے عطیات دے چکی ہے۔ 2012ء میں سر آئیون اور پیس مین فاؤنڈیشن نے ٹریور پروجیکٹ کے لیے 100,000 ڈالرز عطیہ کیے، جو ایل جی بی ٹی نوجوانوں میں بحرانی صورت میں مداخلت اور خودکشی سے بچانے کے لیے مدد فراہم کرتی ہے۔

اپنے پاپ سنگل کس آل دی بلیز گڈبائے کے نئے اجراء کے موقع پر سر آئیون اور پیس مین فاؤنڈیشن نے دھمکی آمیز رویے اور عدم برداشت کے خلاف کام کرنے والی دس کلیدی غیر منافع بخش انجمنوں کو اضافی 100,000 ڈالرز عطیہ کیے، جس میں شامل ہیں: اٹ گیٹس بیٹر پروجیکٹ؛ دی گے، لیسبیئن اینڈ اسٹریٹ ایجوکیشنل نیٹ ورک (جی ایل ایس ای این)؛ دی بورن دس وے فاؤنڈیشن؛ پیسرز نیشنل بلی اِنگ پریونشن سینٹر؛ پیرنٹس اینڈ فرینڈز آف لیسبیئن اینڈ گیز (پی ایف ایل اے جی)؛ اسٹمپ آؤٹ بلی اِنگ؛ کیمپس پرائیڈ؛ لو اِز لاؤڈر/دی جیڈ فاؤنڈیشن، اینٹی-ڈی فیمیشن لیگ اور دی ٹریور پروجیکٹ۔ کس آل دی بلیز گڈبائے کی وڈیو کی ہدایات ایم ٹی وی اور بی ای ٹی اعزاز یافتہ ہدایت کار ایرک وائٹ نے دیں، اور وڈیو دیکھنے، گانے کی اسٹریمز اور ڈاؤنلوڈز سے ہونے والی خالص آمدنی دھمکی آمیز رویے کے خلاف منصوبوں میں عطیہ کی جائے گی۔

ذرائع ابلاغ مدعو ہیں (این وائی سی سے شٹل بسیں فراہم کی جائیں گی)۔

مزید معلومات کے لیے رابطہ کیجیے:

ماریسا ہبرٹ، آر کوری ہے کری ایٹو پبلک ریلیشنز، +1-212-580-0835، marisa@rcourihaycpr.com

تصویر- http://photos.prnewswire.com/prnh/20150303/179367

تصویر – http://photos.prnewswire.com/prnh/20150804/254394

لوگو – http://photos.prnewswire.com/prnh/20150804/254409LOGO

وڈیو – http://youtu.be/jz-7LfMHyZM

برشودڈینجرآسکرز کے لیے میدان میں

لاس اینجلس، 22 اکتوبر 2014ء/ پی آرنیوزوائر/ ایشیانیٹ پاکستان — ہالی ووڈ میں 25 سالہ ایشیائی خاتون ہدایت کار لیوی چینگ کی ہدایت یافتہ فلم برشودڈینجر ایک یا زیادہ آسکرزکے لیے غور کی خاطر منتخب کی گئی ہے؛ اور انٹراسٹیلر، فیوری، فاکس کیچر اور دی ہنگرگیمز: موکنگ جے، پارٹ 1 جیسی فلموں کا مقابلہ کررہی ہے۔

برشودڈینجر کا باضابطہ ٹریلر: https://www.youtube.com/watch?v=rmIs8VzD4h4

برشودڈینجر تصاویر: https://www.dropbox.com/sh/j8a63mb4t8xhpwy/AAB_qaih2CVQFkibqz0HZOEPa#

لیوی چینگ نے برشودڈینجر کی ہدایات دی ہیں اور اس میں اداکاری بھی کی ہے۔ فلموں میں مشکل و خطرناک مناظر کرنے والی خاتون کی حیثیت سے اپنے پیشہ ورانہ دور کا آغاز کرنے والی لیوی23 سال کی عمر مینبرشودڈینجر کو تخلیق کرنے گئیں، جو ممکنہ طور پر انہیں ہالی ووڈ میں ایکشن فلموں کی پہلی ایشیائی خاتون ہدایت کار بنانے جارہی ہے۔

برشودڈینجرایک بھائی بہن کی کہانی پیش کرتی ہے، ایک جنگجو اور ایک مصور کی، جو ایک کنٹینر میں خطرناک سفر کے بعد سیاٹل پہنچتے ہیں۔ ایک آرٹ گیلری کا مالک ان کی صلاحیتوں کا اعتراف کرتے ہوئےانہیں رکھ لیتا ہے، اور اپنے خوابوں کی تعبیر حاصل کرنے میں دونوں کی حوصلہ افزائی کرتا ہے۔ لیکن وہ ایسا شخص نہیں ہوتا جیسا دکھائی دیتا ہے اور ان کے خواب “برشودڈینجر” میں تبدیل ہوجاتے ہیں۔

برشودڈینجر کا آغاز لاس اینجلس میں ہوا جس میں کئی معروف شخصیات نے شرکت کی جیسا کہ جناب آسکرز کے گورنر ڈان ہالاور جمہوریہ انڈونیشیا کی قائم مقام قونصل جنرل محترمہ سری وایونی۔

فن اور مارشل آرٹس کی بظاہرمختلف دنیائیں”برشودڈینجر” میں بڑی خوبصورتی کے ساتھ ملتی ہیں – لاس اینجلس ٹائمز

مارشل آرٹس جرائم کی سنسنی خیز فلم نے فلم ساز لیوی چینگ کے فلمی عہد کا آغاز کیا ہے۔ یہ بین الاقوامی درجہ رکھنے والے 19 سالہ مارشل آرٹسٹ کین چینگ کے بڑی اسکرین پر آمد کا بھی اعلان کرتی ہے جنہوں نے فلم تحریر کی ہے اور اپنی بہن کے ساتھ اداکاری بھی کی ہے۔

میامی کے ہم عصر ہفتہ فن میں ہبلوٹ کی جانب سے معروف فنکار مسٹر برین واش کا جشن

میامی، 6 دسمبر 2014ء/پی آرنیوزوائر/ ایشیانیٹ باکستان — گزشتہ شب پرتعیش سوئس گھڑیوں کے برانڈ ہبلوٹ نے برانڈ کے بال ہاربر بوتیک میں خصوصی اور دلچسپ تنصیب کی رونمائی کے ذریعے پیرس میں پیدا ہونے والے عوامی مصور مسٹر برین واش کی تعظیم و تکریم کی ۔ میامی کے ہم عصر ہفتہ فن کے جشن میں ہبلوٹ نے مسٹر برین واش کے ساتھ شراکت داری کی ہے تاکہ بوتیک کے سامنے کے پورے حصے کو فن کا ایک نمونہ ظاہر کیا جائے۔

ہبلوٹ کے سی ای او  ریکاردو گوادالوپ اور ہبلوٹ بال ہاربر بوتیک کے شراکت دار رک دے لا کروئے نے بال ہاربر بوتیک میں برانڈ کے جشن کے آغاز کے لیے مہمانوں کو مدعو کیا، جہاں جناب گوادالوپ، جناب دے لا کروئے اور مسٹر برین واش نے خصوصی مہمان ایوا لونگوریا کے ساتھ عوام کے لیے پہلی بار تنصیب کی رونمائی کی۔ مہمانوں کو کاکٹیلز اور کاناپیز کا لطف اٹھانے اور ساتھ ساتھ نمائش کے لیے لگائے گئے فن پاروں اور ہبلوٹ کی گھڑیاں دیکھنے کے لیے مدعو کیا گیا۔ تقریب ریکاردو گوادالوپ اور مسٹر برین واش کی جانب سے ایوا لونگوریا کو ایک فن پارہ پیش کرنے کے ساتھ مکمل ہوئی جو ایوا لونگوریا فاؤنڈیشن کے لیے مفید ہوگا۔

ریکاردو گوادالوپ نے کہا کہ “ہم ملک کے نمایاں ترین ہم عصر ہفتہ فن کے دوران یہاں میامی میں اپنی دوست ایوالونگوریا کے ساتھ مل کر مسٹر بریش واش کا جشن منانے پر خوش ہیں۔ مسٹر برین واش اپنی نسل کے معروف مصوروں میں سے ایک ہے، جو اپنے انوکھے اور مختلف انداز کی وجہ سے معروف ہیں، اور عوام کے لیے متبادل اسٹریٹ آرٹ تحریک میں مدد دے رہے ہیں۔ ہمیں اس عظیم مصور کے ساتھ اپنا تعلق جاری رکھنے  پر ، اور آج یہاں انہیں اعزاز بخشنے پر بھی، خوشی ہے ۔”

مسٹر برین واش میڈونا کی البم “سیلیبریشن” کے سرورق کے پس پردہ مصور کی حیثیت سے معروف ہیں، اور ساتھ ساتھ ریڈ ہاٹ چلی پیپرز پر کیے گئے اپنے کام کے حوالے سے بھی۔ انہوں نے ڈیوڈ گوئٹا اور نکی رومیرو کے “میٹروپولس” کی وڈیو کی ہدایات دیں اور بینکسی کی مشہور فلم “ایگزٹ تھرو دی گفٹ شاپ” کے ستارے ہیں۔ اس شراکت داری کے ذریعے ہبلوٹ آرٹ آف فیوژن اور مصوری و تعیش سے محبت کو ملانا جاری رکھتا ہے۔

بال ہاربر تقریب کے بعد ہبلوٹ ایک نجی کشتی پر ایک شاندار عشائیے کی میزبانی کے لیے ہاٹ لونگ کے ساتھ شراکت داری کے ذریعے جشن کو جاری رکھا جس کے بعد میامی کے ساحل پر جے آر اور لورن ریڈنگر کے گھر، معروف کاسا دے سینوس اسٹیٹ میں ایک تقریب منعقد ہوئی۔ مہمانوں میں ایوا لونگوریا، مسٹر برین واش، مائلی سائرس، رسل سیمنز، سوئس بیٹس، سیمی سوسا اور پیٹرک شوارزنیگر شامل تھے جنہیں ساحل کے ساتھ واقع اس خوبصورت مقام پر عیش، مصوری اور موسیقی کے لیے مدعو کیا گیا تھا۔

تصاویر کے لیے ربط: https://app.box.com/s/opcul3lxmd15z5dv6flr

ہوکس فلمز کے ایلکسس نیلسن کےلیےایمی نامزدگی

لاس اینجلس، 25ستمبر 2014ء/پی آرنیوزوائر/ایشیانیٹ پاکستان — لاس اینجلس، کیلیفورنیا اور سوانا، جارجیا میں قائم ڈیجیٹل پروڈکشن اسٹوڈیو ہوکس فلمز کے مالک اور ایگزیکٹو پروڈیوسر ایلکسس نیلسن کو (ایگزیکٹو پروڈیوسرز) کارگا سیون پکچرز کی جانب سے دی ہسٹری چینل کے لیے س”الٹی میٹ گائیڈ ٹو دی پریزیڈنٹس” بنانے پر شاندار گرافک ڈیزائن اور آرٹ ڈائریکشن پر ایمی کے لیے نامزد کیا گیا ہے۔ گالا 30 ستمبر 2014ء کو نیویارک شہر کے لنکن سینٹر میں منعقد ہوگا۔

تصویر – http://photos.prnewswire.com/prnh/20140924/148186
تصویر – http://photos.prnewswire.com/prnh/20140924/148187
تصویر – http://photos.prnewswire.com/prnh/20140924/148188

“الٹی میٹ گائیڈ ٹو پریزیڈنٹس” آٹھ-گھنٹوں کی ایک مختصر سیریز ہے جو ان 43 افراد کا احاطہ کرتی ہے جنہوں نے امریکہ کے صدر کی حیثیت سے خدمات انجام دیں، اس میں دستاویزی فوٹیج اور تصاویر کے ساتھ جامع تاریخی دستاویزات کا استعمال کیا گیا ہے۔ یہ شو تخلیقی تصاویر اور انیمیشن کے ساتھ ان ذمہ داریوں، تقریبات، چیلنجز اور کامیابیوں کو ظاہر کرتا ہے جو امریکی رہنماؤں نے حاصل کیں۔ اس کے گرافکس پروڈکشن کمپنی کارگا 7 کی زیر ہدایت اور پیش کار فکرت مانوگلو کے تحت تخلیق کی گئی تھیں۔

نیلسن کہتے ہیں کہ “یہ ایک بہت بڑا اعزاز ہے، ہم زندگی کو حقیقت کا روپ دینے کے لیے نیا انداز پیش کرنا چاہ رہے تھے جو اسے زیادہ قابل فہم اور جاذب نظر  بناتی ہے۔ 2 جہتی اور 3 جہتی عمل کے ملاپ نے ہمیں تاریخی دستاویزات اور تصاویر کو علیحدہ کرنے، متحرک بنانے، بیانیہ کہانیاں تخلیق کرنے کی سہولت دی جبکہ ان کے ذرائع کی درستگی بھی برقرار رہی۔

مجھے خوشی ہے کہ امتیازی انداز اور گرافکس کو تسلیم کیا جارہا ہے۔ یہ ہوکس کی بعد از پیداواری پائپ لائن میں موجودہ پیشرفت اور پیش کاری کو یکجا کرنے کے لیے موجودہ توسیع کا زبردست آغاز ہے۔”

گو کہ یہ ان کا پہلا ایمی ہوگا، لیکن مستقبل بین ویب سائٹ میبو کیمپس (www.regeneration2014.com) پر ان کی فلم پروڈکشن، سی جی اور ویایف ایکس کو بڑے پیمانے پر تسلیم کیا گیا تھا، جس میں چھ ڈیویایوارڈز، چھ ڈبلیو3 ایوارڈز، چار کمیونیکیٹرایوارڈز، دو آئی اے سی ایوارڈز اور ایک انٹرایکٹومیڈیا ایوارڈ شامل ہیں۔

میبو کیمپس کو کیون سو کی ہدایت میں تیار کیا گیا تھا، جو میبو انٹرنیشنل کے مہم جویانہ سی ایاوہیں، ایک ایسا ادارہ جو اپنے مالک ڈاکٹر رونگسیانگ سو سے متعلق عضویاتی تخلیق نو کی سائنس کی ملکیت دانش کو سنبھالنے پر خصوصی توجہ رکھتا ہے۔ ویب سائٹ کا مقصد تجربے کے ذریعے مغربی دنیا کو عضویاتی تخلیق نو کی سائنس کے عجائبات سے روشناس کرانا ہے۔

ہوکس فلمز کے بارے میں

ہوکس فلم ایک ڈیجیٹل پروڈکشن اسٹوڈیو ہے جو گیم آف تھرونز، ہیری پوٹر7 کے لیے مہمات پر اپنے کام، فاسٹ 5، زومبیورز جیسی فیچر فلموں، اسپائیک ٹی وی کی ڈیڈلیسٹ واریئرز، اور کیٹی پیری، برٹنی اسپیئرز، لٹل ڈریگن اور آبسولیوٹووڈکا کے لیے میوزک وڈیوز کے لیے کام کی وجہ سے معروف ہے۔ ہوکس فورٹ آرجائیل فلمز کے ساتھ شراکت داری رکھتا ہے اور ڈبل وائیڈبلوز پر ٹی وی سیریز اور اے سوانا ہنٹنگ فیجر فلم کی تیاری میں مصروف ہے۔

http://emmyonline.com/news_35th_nominations

پی آر رابطہ:

pr@HOAXFilms.com

شاہ رخ خان کا کولکتہ نائٹ رائیڈر کی فتح پر جشن

ممبئی:بھارتی فلم اسٹاراور کو لکتہ نائٹ رائیڈرکے شریک مالک شاہ رخ خان نے ٹی ٹوئنٹی چیمپئن لیگ میںلاہور لائینز کے خلاف کولکتہ نائٹ رائیڈر کی فتح پر خوشی کا اظہار کیا ہے۔انھوں سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹیوٹر پر اپنی خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ میں آج کولکتہ نائٹ رائیڈر کی فتح پر بے حد خوش ہوں،فلم اسٹار شاہ رخان نے کو لکتہ نائٹ رائیڈر کے کھلاڑیوں کو فتح پر مبارک باد بھی پیش کی ہے۔

’ہلاکتیں ناقابلِ قبول مگر حالات بگڑنے نہیں دے سکتے‘

 بھارت کے وزیرِ خارجہ سلمان خورشید کا کہنا ہے لائن آف کنٹرول کے قریب پاکستانی فوج کی مبینہ کارروائی میں دو بھارتی فوجیوں کی ہلاکت کا

واقعہ ناقابلِ قبول ہے تاہم حالات کو مزید خراب ہونے دیا جا سکتا۔

اس سے قبل بھارتی حکام کی جانب سے کو اشتعال انگیز قرار دیتے ہوئے کہا گیا تھا کہ اس کارروائی کا ’متناسب‘ جواب دیا جائےگا جبکہ پاکستان کے عسکری حکام نے فائرنگ اور بھارتی فوجی کی ہلاکت کے الزامات مسترد کرتے ہوئے اسے بھارتی پروپیگنڈا قرار دیا ہے۔

بھارتی حکومت نے بدھ کو نئی دلی میں پاکستان کے ہائی کمشنر کو طلب کر کے اپنے دو فوجیوں کے مارے جانے کے واقعے پر احتجاج کیا ہے۔

بھارتی وزارت خارجہ کے ترجمان کے مطابق اس ملاقات میں خارجہ سیکرٹری رنجن متھائي نے ہائی کمشنر سلمان بشیر سے کہا ہے کہ بھارت اس طرح کے واقعات قطعاً برداشت نہیں کرے گا اور پاکستان کو کنٹرول لائن کا احترام کرنا ہوگا۔

ہمارے نامہ نگار کے مطابق بدھ کو پریس کانفرنس میں وزیرِ خارجہ نے کہا کہ ’اس واقعے کو مزید بڑھنے نہیں دیا جائے گا۔ ہماری جانب سے پاکستانی ہائی کمیشن کو گہری تشویش سے آگاہ کروا دیا گیا ہے۔ ہم ان کے رد عمل کا انتظار کریں گے لیکن یہ واقعہ ناقابل قبول ہے۔‘

انہوں نے اس سے قبل ایک مقامی ٹی وی سے بات کرتے ہوئے بھی کہا تھا کہ یہ ایک انتہائی حساس معاملہ ہے اور ’ہمیں تمام حقائق کو ذہن میں رکھنا ہوگا۔یہ کارروائی قیام امن کو پٹری سے اتارنے کی کوشش معلوم ہوتی ہے۔۔۔اور ہمیں ایسا راستہ تلاش کرنا ہوگا کہ مذاکرات کا عمل تباہ نہ ہو جائے۔‘

بھارتی وزیرِ دفاع اے کے انٹونی نے اس سلسلے میں بیان دیتے ہوئے کہا ہے کہ ’پاکستانی فوج کی کارروائی انتہائی اشتعال انگیز ہے۔ انہوں نے بھارتی فوجیوں کی لاشوں سے جو سلوک کیا ہے وہ غیر انسانی ہے۔ہم حالات پر نظر رکھے ہوئے ہیں اور اس معاملے پر پاکستانی حکومت سے بات کریں گے۔‘