امن مارچ کا صحافی خلیل جبران کے قاتلوں کی گرفتاری کا مطالبہ

خیبر (پی پی آئی) صحافی خلیل جبران کے قتل کے خلاف سیاسی جماعتوں اور سول سوسائٹی کی تنظیموں کے رہنماؤں اور کارکنوں نے منگل کو خیبر سے لنڈی کوتل تک امن مارچ کیا، قاتلوں کی فوری گرفتاری اور مقتول کے خاندان کو انصاف کی فراہمی کا مطالبہ کیا۔ایم پی اے سہیل آفریدی اور صوبائی وزیر عدنان قادری بھی مارچ میں شامل ہوئے۔ مظاہرین نے پلے کارڈز اور بینرز اٹھا رکھے تھے جن پر مختلف نعرے درج تھے۔ وہ قاتلوں کو فوری انصاف اور سزا دینے کا مطالبہ کر رہے تھے۔اس موقع پر رہنماؤں نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ صحافی خلیل جبران کا قتل افسوسناک واقعہ ہے۔ ان کا کہنا تھاقاتل ابھی تک قانون کی گرفت سے باہر ہیں، جو انٹیلی جنس اداروں کی ناکامی ہے۔ ریاستی اداروں اور حکومت کو قاتلوں کی فوری گرفتاری کو یقینی بنانا چاہیے۔انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ خطے میں امن کی بحالی کے لیے کردار ادا کرے، جب تک خلیل جبران کو انصاف فراہم نہیں کیا جاتا احتجاج جاری رہے گا۔ایم پی اے سہیل آفریدی اور صوبائی وزیر عدنان قادری نے کہا کہ صحافی کے قاتلوں کی گرفتاری اور اس کے خاندان کو انصاف دلانے کے لیے اسمبلی فلور پر بھرپور آواز اٹھائیں گے۔ آفریدی نے کہا کہ انہوں نے شہید صحافی کے ورثا کو شہید پیکج کی فراہمی کے لیے وزیر اعلیٰ سے رابطہ کیا ہے جو جلد فراہم کر دیا جائے گا۔

Latest from Blog