شینیانگ: چھٹے دریائے ہن سمفونک میوزک فیسٹیول کا بڑے پیمانے پر آغاز

شین یانگ ، چین، 9 ستمبر، 2020 / سنہوا- ایشیا نیٹ / –  چھٹے دریائے ہن سمفونک میوزک فیسٹیول کا  4 ستمبر کی شام شینیانگ میں بڑے پیمانے پر آغاز ہوگیا۔
چھٹے دریائے ہن سمفونک میوزک فیسٹیول کا 4 ستمبر کی شام شینیانگ میں بڑے پیمانے پر آغاز ہوگیا۔

اس فیسٹیول کا موضوع “مجموعی خوشحالی کا حصول ، بہترزندگی کا بانٹنا”ہے۔ شینیانگ بلدیہ کے محکمہ تشہیرات کے مطابق ،  4 سے 9 ستمبر تک چار پرفارمنس کا اہتمام کیا گیا ہے۔

افتتاحی تقریب ” شبِ دریائے ہن ” کی دُھن  شین یانگ سمفنی نے ترتیب  دی ۔ موسیقاروں نے “دی یلو فیور  سے منتخب کردہ سلسلہ “، ” دی نارتھ ایسٹ ونڈ” ، “بیوٹی فل گیراٹی اَوورچر” اور “اسپینش کپیلا”جیسے  مسحورکن نغمے پیش کیے،  اور سامعین کے لئے فن کی یہ خوبصورت دعوت شین شوئی وان پارک میں 9 ستمبر تک جاری رہے گی۔ اس کے علاوہ ، اِنرمنگولیا نیشنل آرٹ تھیٹر سمفنی آرکسٹرا شینگ جنگ گرینڈ تھیٹر اور شین شوئی وان پارک میں علی الترتیب 6 اور 8 ستمبر کو   ایک کنسرٹ کا انعقاد کریں گی۔

ووہان سمفونی آرکسٹرا سمیت متعدد مشہور مقامی آرکسٹرا زنے اپنی پرفارمنس کے لئے ویڈیوز ریکارڈ کیں ، جنہیں میوزک فیسٹیول کو بہتر بنانے کے لئے بڑی براہ راست اسکرین پر نشر کیا گیا تھا۔ یہاں ایک ہی وقت میں ، “آن لائن کنسرٹ” اور “آن لائن کورس” کے تین سیشن بھی ہوں گے ، جس کے دوران عوام الناس اور سمفنی شائقین آئن اسٹائن ایف ایم کے پلیٹ فارم پر موسیقی سن سکتے ہیں۔

چھٹے ہن ریور سمفنی میوزک فیسٹیول نےبالکل نئے انداز اور خصوصیات کا مظاہرہ کیا ، شوقیہ ثقافتی زندگی کو تقویت دی، مٹھاس سے بھرپور آواز پھیلائی، شہر کی ثقافتی، وسعت پذیری اور مقبولیت کو اجاگر کیا ، جسے فیشن یافتہ ، جدید اور بین الاقوامی میٹروپولیس امیج بنانے کے لئے وسعت دی گئی ہے۔

ماخذ: شینیانگ بلدیہ کا محکمہ تشہیر

منسلکہ تصویری لنک: http://asianetnews.net/view-attachment?attach-id=370855

‫ٹیکنو موبائل نے سونی کا پہلا 64 MP کیمرے والا سمارٹ فون افریقہ میں متعارف کرادیا

TECNO CAMON 15 Premier

ٹیکنو کیمون 15 پریمیئر

ہانگ کانگ،17مارچ،2020/پی آر نیوزوائر /–بین الاقوامی سطح پر سرکردہ موبائل برانڈ ٹیکنو(www.TECNO-mobile.com) مارکیٹ میں اپنے سمارٹ فون کمون 15سیریز کےلانچ کے ساتھ ایک بار پھر سمارٹ فون کیمرےکی ابھرتی ہوئی مارکیٹ میں تبدیلی لارہا ہے ۔کہا جارہا ہے کہ کمون 15سیریز کے کیمرے میں اعلی معیار کی سونی چپ لگائی جائے گی جو اس صنعت میں قائدکی حیثیت سے رکھتی ہے۔

یہ لانچ کمون 15سیریز کے لیے تو ایک معمولی قدم ہوگا لیکن ٹیکنو کے لیے یہ لانچ ایک اہم سنگ میل ہوگا۔ٹیکنو کا کمون15سیریزافریقہ کی مارکیٹ میں سونی کی اعلی معیار کی چپ سے لیس پہلا سمارٹ فون ہوگا،اور کمون 15سیریز کے ہائی ڈیفینیشن کیمرے ایک نئے دور میں داخل ہونگے۔

اپنے اعلی ڈیزائن اور سینسر ٹیکنالوجی کے ساتھ سونی کی چپ کیمرے کو بہت زیادہ مدد فراہم کرتی ہے ۔مثلاَ اس کا سب سے اہم فائدہ یہ ہے کہ کیمرےمیں سونی کی چپ فوٹوگرافی کے ہر پہلو کو اتنی زیادہ تفصیل سے نمایا ں کرتی ہےیعنی کہ لمحوں کےحساب سے پکسل لیول فراہم کرتی ہے۔تصویر کی کوالٹی دوسری چپ کی نسبت یکساں پکسلز پر زیادہ اچھی ہے اور تصویر کی تفصیل زیادہ صاف طریقے سے پیش کرتی ہے۔یہاں تک کہ ڈارک پورٹریٹ بھی روشن اور صاف ہوتی ہے۔

سونی کی چپ سے لیس سمارٹ فون سے جب تصویر لی جاتی ہے،تو انتہائی زوم کرنے کے بعد بھی تصویر کی ہر تفصیل بہترین طریقے سے مکمل نظر آتی ہے۔ڈیجیٹل شٹر کو دبائیں اور خوبصورے نظارے اور یادگار لمحات کو کیمرے میں قید کریں ،اور آپ دیکھیں گے کہ ہر زاویہ صاف و شفاف دکھائی دیتاہے۔شام کے مناظر میں زندگی رمق دیکھنے کے لیے اس پر زوم کریں اور تصویر آپ کے سامنے آتی جائے گی۔

حال ہی میں کچھ عالمی ٹیکنالوجی میڈیانے اندازہ لگایا کہ سال 2020سمارٹ فون ٹیکنالوجی میں نئی اختراعات کا سال ہے اور میگا پکسل کی بڑھتی ہوئی تعداد2020کا ایک اہم ٹرینڈ ثابت ہوگی۔سمارٹ فون صارفین میں ہائی میگا پکسل کی مانگ اور ضروریات بڑھتی جارہی ہے اور صنعت کار پکسل کی کارکردگی کو بڑھانے کے لیے بھر پور کوششیں کررہے ہیں تاکہ صارفین کی بڑھتی ہوئی ضروریات پوری کی جاسکیں۔بجا طور پر ٹیکنو موبائل اپنی اختراعات کے ساتھ صحیح راستے پر جارہاہے۔

ذرائع کا یہاں تک کہنا ہے کہ ٹیکنو کی نئی کمون15سیریز کو 64میگاپکسلز سے لیس کیا گیا ہے جس سے انتہائی اعلی درجے کی فوٹوگرافی کا تجربہ حاصل ہوگا۔مارکیٹ میں آنے کے بعد افریقہ میں سونی کی چپ پر چلنے والا یہ پہلا سمارٹ فون ہوگا ،جو افریقہ میں سمارٹ فون کی صنعت میں اہم سنگ میل ہوگا۔ 64میگا پکسل سمارٹ فون کی پکسل ٹیکنالوجی میں ایک اور بڑی پیش رفت ہوگی۔

سونی کے ساتھ اس تعلق کے بعد ٹیکنو کا کمون 15سیریز کتنی اچھی کارکردگی دکھائے گااور کیا یہ آنے والے دور میں فوٹو گرافی کا بادشاہ بن پائے گا؟ جاننے کے لیے رابطے میں رہیئے۔

تصویر : https://photos.prnasia.com/prnh/20200317/2752712-1

‫او سی اے :ایشین بیچ گیمز سانیا 2020مقررہ شیڈول کےمطابق ہونگے۔

ہائیکو،چین،10مارچ 2020, /ژن ہوا-ایشیا نیٹ / –اولمپک کونسل آف ایشیا (اوسی اے)نے اتوار کو اعلان کیا ہے کہ چھٹی ایشین گیمز 28نومبر سے 6دسمبر تک سانیا میں مقررہ شیڈول کے مطابق منعقد کیے جائیں گے۔

اوسی اے نے اپنے 45این او سی ممبران کو ای میل کرکے تصدیق کی ہے کہ اولمپک کونسل آف ایشیا اور چینی اسپورٹس اتھارٹی سانیا میں سال کے آخر میں منعقد ہونے والے ایشین بیچ گیمز کے لیے پوری زوروشور سے تیاریوں میں مصروف ہیں۔

اوسی اے کی ای میل میں میں بتایا گیا کہ “اوسی اے وسطی چین وہان مٰیں کوروناوائرس (COVID-19) کے پھیلنے کے بعد سے مستقل طور پر چینی اولمپک کمیٹی اور سانیا بیچ گیمز کی مقامی کمیٹی کے ساتھ مسلسل رابطے میں رہاہے۔

مقامی صحت عامہ ذمہ داران کے مطابق سانیا میں کوروناوائرس (COVID-19) کے آخری مریض کا علاج کرکے ہسپتال سے فارغ کردیا گیاہے۔

اوسی اے کے ڈائریکٹر جنرل حسین المسلم کا کہناتھا “اوسی اے،ہمارے 45قومی اولمپک کمیٹی کے ممبران اور سانیا شہر اور صوبہ ہینن کے لوگوں کے لیے یہ ایک بڑی خوش آئند بات ہے۔”

“ہم چینی اولمپک کمیٹی اور مقا می انتظامی کمیٹی کے ساتھ کئی ہفتوں سے قریبی تعاون کرتے آرہے ہیں اور اس بات پر بہت زیادہ خوش ہیں کہ سانیا اب کورونا وائرس (COVID-19) سے پاک ہوگیا ہے اور کوئی نئے کیسز رپورٹ نہیں ہوئے ہیں۔”

“ہم اس موقع پر مرکزی حکومت ،صوبائی حکومت اور بلدیاتی حکومت کو مبارکباد پیش کرتے ہیں اور اس بات پر ان کی تحسین کرتے ہیں کہ انھوں نے کورونا وائرس (COVID-19) کو مزید پھیلنے سے روکا۔”

“جہاں تک اوسی اے کی بات ہے تو یہ اب بھر پور انداز سے آگے بڑھ رہی ہے۔اور ہم چین میں اپنے شراکت داروں کی مددجاری رکھیں گے اور ان کے ساتھ قدم سے قدم ملاکر آنے والے ہفتوں اور مہینوں میں کام کریں گے۔”

سانیا میں مسلسل 25دن سے کورونا وائرس(COVID-19) کے کسی کیس کی تصدیق نہیں ہوئی ہے ۔مارچ8 تک سانیا میں کورونا وائرس کے 54مصدقہ کیسز تھے جن میں سے ایک مریض کی موت واقع ہوئی جبکہ 53کو علاج کے بعد ہسپتال سے فارغ کردیا گیا۔

ذریعہ : او سی اے

‫سی این پی سی نے COVID-19 وباء کے باوجود بیرون ملک منظم آئل اینڈ گیس آپریشن جاری رکھا

بیجنگ ، 6 مارچ ، 2020 / پی آر نیوز وائر / – چائنا نیشنل آئل اینڈ گیس ایکسپلوریشن اینڈ ڈویلپمنٹ کارپوریشن (سی این او ڈی سی) کی اینڈیس پٹرولیم ایکواڈور لمیٹڈ، جو چین نیشنل پٹرولیم کارپوریشن (شنگھائی: 601857) (سی این پی سی) کی مکمل ملکیتی کمپنی ہے ، نے ایکواڈور کے صوبہ اوریلانا میں تیل کے دو نئے کنؤوں سے پیداوار شروع کی جو لیتھولوجک تیل ذخائر کی دریافت کے سلسلے میں CNPC کے لئے ایک اہم پیشرفت ہے۔

چونکہ COVID-19 عالمی سطح پر پھیل رہا ہے، اس لئے سی این پی سی اپنے مختلف بیرون ملک منصوبوں میں بلاتعطل پیداوار اور متوازن انتظام کو یقینی بنائے ہوئے ہے ، جبکہ دوسرے ممالک ، شراکت داروں اور عملے کو وبا کی روک تھام اور ان پر قابو پانے کے لئے چین کے موثر اقدامات سے متعارف بھی کر رہا ہے۔ سی این پی سی کے چیئرمین ڈائی ہولانگ نے غیر ملکی شراکت داروں کو خصوصی طور پر خط لکھے اور ان سے ہمدردی اور تعاون حاصل کیا۔

26 جنوری کو ، سی این او ڈی سی نے درجہ اول کی صحت عامہ کی ایک ہنگامی سطح کے ردعمل کا آغاز کیا اور COVID-19 کی روک تھام اور کنٹرول کے لئے ایک سرکردہ گروپ کو ساتھ ملایا۔ سب سے اہم کام مختلف احتیاطی اقدامات اور کنٹرول کو نافذ کرنا اور اس بات کی ضمانت دینا ہے کہ پیداوار اور دیگر آپریشن انتہائی منظم انداز میں انجام دیئے جارہے ہیں۔

سی این او ڈی سی نے اس کے بعد آسان عملدرآمد کی حکمت عملی میں تعاون کے لئے ہم آہنگ مواصلات اور ویڈیو کانفرنسنگ پلیٹ فارم کے استعمال کو اجاگر کرنے والے ٹیلی کمیوٹنگ کے حل متعارف کروائے۔ بیرون ملک قائم کمپنیوں اور پروجیکٹس نے بیماریوں کی روک تھام اور کنٹرول پر عمل درآمد کے پروگرام اور ہنگامی منصوبے بھی تیار کیے جن میں ضروری سامان کی خریداری اور عملے کی صحت مندی پر گہری توجہ دینا شامل ہے۔

اس کے علاوہ ، سی این پی سی نے وباء کے خلاف چین کی جدوجہد اور سی این پی سی کے عوامی مفاداتی اقدامات اور حکومت، مقامی کمیونیٹیوں اور اپنے مشترکہ منصوبوں میں کام کرنے والے غیرملکیوں کے لئے کیے جانے والے اقدامات کے بارے میں فعال طور پر اطلاعات دیں اور اپنے چینی عملے کی صحت کی صورتحال کے بارے میں باقاعدگی سے تفصیلات فراہم کیں۔

نائجر میں سی این پی سی کی ریفائننگ کمپنی نے نائجر کی سرکاری ویب سائٹ ACTUNIFER اور قومی اخبار Le SAHEL میں COVID-19 کے بارے میں مضامین شائع کیے۔ نائجر-بینن خام تیل پائپ لائن منصوبے سے ریناٹو محمدو سلیفونے COVID-19 کی روک تھام اور کنٹرول پر مقامی اخبار کے لئے لکھا۔ اس سلسلے میں سی این پی سی نے برازیل میں اپنے شراکت داروں اور برادری کے رہائشیوں کو 30 سے زیادہ خطوط ارسال کیے۔

پیٹرو چین کے نائب صدر اور سی این او ڈی سی کے چیئرمین وانگ ژونگکائی نے کہا: “سی این پی سی ناول کورونا وائرس کے خلاف جنگ میں اپنے تمام عملے اور شراکت داروں کے شانہ بشانہ کھڑا ہے۔ ہم اپنے بیرون ملک منصوبوں سے تیل و گیس کی مسلسل پیداوار کو یقینی بنا کر، میزبان ممالک کی معاشی اور معاشرتی ترقی میں حصہ لینے کی اپنی پوری کوشش کرتے ہوئے سب کو محفوظ اور صحت مند رکھنے کے لئے ہر طرح کی مدد فراہم کرنے کے پابند ہیں۔”

انڈونیشیا کے صدر نے ملک کی سب سے بڑی مربوط وسکوز ریان پیداواری سہولت کا افتتاح کردیا

  • سہولت میں 15 ٹریلین انڈونیشی روپیہ (یو یس ڈالر 1.1 بلین) کی سرمایہ کاری
  • قومی ٹیکسٹائل صنعت کی ترقی اور ‘ میکنگ انڈونیشیا 4.0 ‘کے منصوبے کو فروغ

Image 1 (1)

انڈونیشیا کے صدر ، جوکو وی دودو ، کی آج انڈونیشیا کی سب سے بڑی مربوط ویسکوز ریان پیداواری سہولت کا افتتاح کرنے کی تقریب میں لی گئی تصویر۔ نیو ایشیا پیسیفک ریان (اے پی آر) سہولت پانکلان کیرینسی ، صوبہ ریاؤ، سماترا میں واقع ہے۔ اے پی آر، وسائل کی حامل مینوفیکچرنگ کمپنیوں آر جی ای (رائل گولڈن ایگل) گروپ کا ایک حصہ ہے۔ آر جی ای کے بانی اور چیئرمین سُکانتوتنوتو ، اور آر جی ای کے ڈائریکٹر اینڈرسن تنوتو بھی تصویر میں نمایاں ہیں۔

پانکالان کیرینسی ، انڈونیشیا – Media OutReach- فروری، 24، 2020 – انڈونیشیا کے صدر جوکو وی دودو نے آج ،ملک کے ٹیکسٹائل سیکٹر اور انڈونیشیا کی حکومت انڈسٹریل 4.0 ترقیاتی حکمت عملی کو فروغ دیتے ہوئے انڈونیشیا کی سب سے بڑی مربوط وزسکوزریان پیداواری سہولت کا افتتاح کردیا۔

نئی ایشیا پیسیفک ریان (اے پی آر) سہولت اسی پروڈکشن کمپلیکس میں واقع ہے جس میں پانکالان کیرینسی ، صوبہ ریاؤ ، سماٹرا میں اے پی آر آئی ایل گروپ ہے۔ یہ مشترکہ مقام مربوط سرگرمیوں کی سہولت دیتا ہے جہاں اے پی آر آئی ایل فیڈز سے ویسکوز ریان کی تیاری کے لئے پلانٹنگ کے قابل تجدید گودے کی فراہمی براہ راست اے پی آر کو ہوتی ہے۔ نیا آپریشن تقریبا 15 ٹریلین روپیہ (یو ایس ڈی 1.1 بلین) کی مجموعی سرمایہ کاری کی نمائندگی کرتا ہے۔

اے پی آر سہولت کی سالانہ پیداواری گنجائش 240،000 ٹن ہے۔ تقریب میں صدر وی دودو نے افتتاحی تختی پر دستخط کیے اور صدر کی جانب سے 10،190 ٹن ویسکوز ریان فائبر ترکی(جو اے پی آر کی ایک اہم برآمدی منڈی ہے) بھیجنے کے لئے ایک برآمدی کنٹینر اور مزید 12،000 ٹن مرکزی جاوا بھیجنے کے لئے،علامتی طور پر مہر بند کیا۔

Image 2

انڈونیشیا کے صدر ، جوکو وی دودو (وسط) ، ہمراہ ڈائریکٹر آر جی ای اینڈرسن تنوتو (بائیں)، آر جی ای کے بانی اور چیئرمین سُکانتو تنوتو(وسط / بائیں)، اور وزیر صنعت ، آگس گومیوانگ کارتاساسمیتا (دائیں) کی نئے ایشیا پیسیفک ریان (اے پی آر) پیدواری سہولت واقع ، پانکالان کیرنسی، صوبہ ریاؤ، سماترا کے دورے کے دوران لی گئی تصویر۔ اے پی آر وسائل کی حامل مینوفیکچرنگ کمپنیوں آر جی ای (رائل گولڈن ایگل) گروپ کا ایک حصہ ہے۔ صدر ودودو نے آج نئی اے پی آر کی سہولت کا افتتاح کیا ، جو انڈونیشیا میں ویسکونز ریان کی سب سے بڑی مربوط پیداواری سہولت ہے۔

تقریب میں وزیر صنعت ، آگس گومیوانگ کارتاساسمیتا ، وزیر تجارت تجارت آگس سوپر مانتو ، ریاؤ کے گورنر ، سیامسوار ، آر جی ای کے بانی اور چیئرمین سُکانتو تنوتو ، اور آر جی ای کے ڈائریکٹر اینڈرسن تنوتو نے بھی شرکت کی۔

افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے صدر وی دودو نے قومی ٹیکسٹائل انڈسٹری کی ترقی میں اے پی آر کی سرمایہ کاری کا خیرمقدم کیا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کی طرف سے فراہم کردہ محرک کے ساتھ ساتھ معاشی نمو کو بڑھانے میں نجی شعبے کا کردار اثر انگیز تھا۔ “ہماری لباس کی صنعت ویتنام سے زیادہ بڑی ہونی چاہئے کیونکہ ہمارے یہاں صنعتوں کے فروغ کے لئے اپنا خام مال ، جیسے کہ ویسکوز ریان ، پہلےسے موجود ہے،” ان کا یہ کہنا تھا۔

معاشی تعاون

اے پی آر کا بزنس ملک میں مزید گراں قدر سرمایہ کاری اور قومی ٹیکسٹائل اور ٹیکسٹائل پروڈکٹ (ٹی پی ٹی) کی صنعت کو تقویت دینےکے صدر جوکووی کے وژن کے ساتھ ہم آہنگ ہے جیسا کہ ‘میکنگ انڈونیشیا 4.0‘ کے منصوبے میں طے کیا گیا ہے ۔ اس کے علاوہ ، ویسکوز ریان کی پیداوار گھریلو طلب کو پورا کرنے کے لئے ٹیکسٹائل کے خام مال ، خاص طور پر روئی کی درآمد پر انحصار کو کم کرے گی۔

وزیر صنعت، آگس گومیوانگ کارتاساسمیتا نے کہا: “انڈونیشیا میں پیدا ہونے والے خام مال کی دستیابی اور استعمال کو بہتر بناتے ہوئے ، ہم اپنے ٹیکسٹائل کے شعبے کی کارکردگی میں اضافہ کر سکتے ہیں۔ مزدوری سے وابستہ صنعت کی کارکردگی اور مسابقت کو بہتر بنانے کے لئے ہم جو اقدامات کر رہے ہیں یہ ان میں سے محض ایک ہے۔

ڈائریکٹر اے پی آر ، بصری کمبہ نے کہا: “اے پی آر کی موجودگی سے ٹیکسٹائل اور ٹیکسٹائل مصنوعات کی صنعت کے بلند اور نچلے درجےکے شعبوں میں چھوٹے اور درمیانے حجم کے کاروباروں کے لئے روزگار اور کاروباری مواقع پر مثبت اثر پڑے گا۔ ہم اپنی نئی سہولت کا افتتاح کرنے پر صدر جوکووی کے شکر گزار اور ممنون ہیں”۔

ترکی کے علاوہ ، اے پی آر کی مصنوعات 14 دیگر ممالک کو بھی برآمد کی جاتی ہیں جن میں پاکستان ، بنگلہ دیش ، ویتنام ، برازیل اور یورپ کے مختلف حصوں جیسے اہم ٹیکسٹائل مراکز شامل ہیں۔ یہ مصنوعات انڈونیشیا میں وسعت پزیر فیشن کی صنعت کو بھی مدد دیتی ہیں۔

ایک اندازے کے مطابق اے پی آر سالانہ 1.77 ٹریلین روپیہ (130 ملین یو ایس ڈالر) سے زیادہ زرمبادلہ کی آمدنی پیدا کرسکتی ہے ، اور درآمد شدہ خام مال پر انحصار سالانہ 2.01 ٹریلین روپیہ (149 ملین یو ایس ڈالر) تک کم کرسکتی ہے۔

پائیدار پیداوار

اے پی آر قابل تجدید ، ٹریس ایبل اور بائیوڈیگریڈ ایبل خام مال سے پائیدار ویسکوز ریان فائبر تیار کرتا ہے۔ کمپنی کا خام مال اے پی آر آئی ایل گروپ کے ذریعہ فراہم کیا جاتاہے ، جسے قومی (ٹمبر لیگلٹیٹی ویریفیکیشن سسٹم) اور بین الاقوامی سرٹیفیکیشن (توثیقی پروگرام برائے فاریسٹ سرٹیفیکیشن / پی ای ایف سی) کے ذریعہ ایک ذمہ دار گودا تیار کرنے والے کے طور پر تسلیم کیا جاتا ہے۔

اے پی آر انڈونیشیا کے پہلا ویسکوز ریان تیار کرنے والے ہیں جو ویسکوز اسٹپل فائبر کی ذمہ دار نہ تیاری کے لئے سوئیزرلینڈ میں قائم ایک خود مختار سرٹیفیکیشن تنظیم او ای کےاو-ٹیکس ® سے بین الاقوامی سطح پر تسلیم شدہ ایس ٹی ای پی سرٹیفیکیشن کے حامل ہیں۔

پائیدار اسباب اور انڈونیشیا میں فیشن کی تیاری کو فروغ دینے کے لئے اے پی آر نے ‘سب کچھ انڈونیشیا’ مہم کا آغاز کیا ہے۔ اس کا مقصد ٹیکسٹائل مینوفیکچرنگ کے عالمی مرکز کے طور پر انڈونیشیا کی دوبارہ بحالی کی حمایت کرنا ، اور گھریلو فیشن ڈیزائن اور تخلیقی صلاحیتوں کو نیا انداز دینا ہے۔

ایشیا پیسیفک ریان کے بارے میں:

ایشیاء پیسیفک ریون ایشیاء میں پہلا مکمل طور پر مربوط ویسکوز ریان پروڈیوسر ہے۔ پانکلان کیرینسی، ریاؤ میں واقع 240,000 ٹن گنجائش والی فیکٹری ، ٹیکسٹائل کی ضروریات کو پورا کرنے کے لئے اعلی درجے کی ریان تیار کرنے کے لئے جدید ترین پروڈکشن ٹیکنالوجی کا استعمال کرتی ہے۔ اے پی آر ایک معروف ویسکوز ریان پروڈیوسر بننے کے لئے پرعزم ہے جو پائیداری ، شفافیت اور آپریشنل کارکردگی کی حامل ہے ، قوم اور ملک کے مفادات کے لئے کام کرتی ہے ، اور صارفین کو قدر فراہم کرتی ہے۔ اے پی آر وسائل کی حامل مینوفیکچرنگ کمپنیوں آر جی ای (رائل گولڈن ایگل) گروپ کا ایک حصہ ہے۔

میڈیا رابطے کے لئے:

جیروت ہینڈوکو
ہیڈ آف کارپوریٹ کمیونیکیشن، ایشیا پیسیفک ریان
ای میل: Djarot_Handoko@aprayon.com

ژیان چین میں کورونا وائرس کے پھیلاوٗ کے باوجود کاروباری معمولات بحال ہونے لگے

ژیان،چین،23 فروری ،2020/سنہوا –ایشیا نیٹ /–جیسے جیسے چین کوررونا کے مہلک وائرس پر قابو پا رہاہے ویسے ہی اس کی صنعتیں اپنے کاروباری معمولات پر واپس آنے لگی ہیں۔ملک کے اہم ترین شہروں میں سے ایک ژیان کو کہ ایک اہم سائنسی ریسرچ،تیلیمی اور صنعتی مرکز ہے،اس نے حال ہی میں کچھ اقدامات متعارف کیے ہیں تاکہ کاروباری تنظیموں کو ان مشکل حالات سے نکالا جائے اور ان کی صنعتی پیداوار کو دوبارہ سے شروع کیا جائے،یہ اقدامات حکومتی سہولیات کو بڑھانا ،سوشل سیکیورٹی کی فیس ادا کرنے میں تاخیر کی سہولت اور روزگار کے مواقع کو مراعات اور اضافی معاوضہ کے ذریعے مزید مضبوط کرنا ہے۔

ژیان بیورو آف انڈسٹری اینڈ انفارمیشن ٹیکنالوجی کی جانب سے شائع کردہ اعدادوشمار کے مطابق ،19فروری تک 400سے زائد کمپنیوں نے ژیان میں دوبارہ سے کام کا آغاز کردیاہے۔اعدادوشمار کے مطابق34بڑی صنعتی کمپنیوں نے دوبارہ سے کام شروع کر کے پیداوار شروع کردی ہے ،یہ ان 45بڑی کمپنیوں کا 75.6%ہے۔پیداواری صلاحیت بھی آہستہ آہستہ بحال ہو رہی ہیں کیونکہ ایسی 9بڑی کمپنیاں جن کی پیداوار اور فروخت کا تخمینہ RMB10بلین سے زیادہ ہے،انھوں نے اپنی ساری یا تھوڑی پیداوار شروع کردی ہے۔ان کمپنیوں میں شانگزی آٹو موبائل ہولڈنگز لمیٹیڈ ،سام سنگ (چین)سیمی کنڈکٹر کمپنی لمیٹیڈ شامل ہیں۔

10فروری کے دن شانگزی فاسٹ آٹو ڈرائیو گروپ کمپنی لمیٹیڈ کے ژیان میں موجود ہیڈکوارٹر نے دوبارہ سے کام شروع کردیا۔کمپنی نے وبائی بیماری سے حفاظت کے سخت انتظامات کرتے ہوئے اپنی کئی پروڈکشن لائنز شروع کردیں ہیں،جیسے کہ گیئر پراسسنگ لائن تاکہ مارکیٹ کی ضروریات کو پوراکیا جاسکے۔فروری کی 14تاریخ کو شانگزی آٹو موبائل ہولڈنگز نے بھی اپنی پیداوار کا دوبارہ آغاز اس کے 2000سے زائد ملازمین کے کام پر واپس آنے اور ایک پروڈکشن لائن کے دوبارہ بحال ہونے سے کیا۔ہواوے ژیان ریسرچانسٹیٹیوٹ کے 12,000سے زائد ملازمین اپنے کام پر واپس آئے ہیں ۔مائیکرون سیمی کنڈکٹر(ژیان)کمپنی لمیٹیڈ نے اپنی پیداواری صلاحیت کو 80%تک بحال کردیاہے۔

ژیان انٹرنیشنل ٹریڈ اینڈ لوجسٹک پارک،چین کی اندرون ملک سب سے بڑی بندرگاہ نے ایک نہ روکنے والی سہولت مہیا کی ہے ۔اس سہولت کی رو سے ٹرکوں کو روکنے کی ضرورت نہیں ہوگی،ڈرائیوروں کو کاک پٹ سے باہر نکلنے کی ضرورت نہیں ہوگی اور ٹریفک کو اسٹیشن کے باہر انتظار کرنے کی ضرورت نہیں ہوگی ۔وبائی بیماریوں کے عدم پھیلاوٗ کے لیے سخت تدابیر اختیار کی گئیں ہیں ،جیسےکہ جراثیم کش دوائیں اور ان جراثیم کو مزید پھیلنے سے روکنا،درجہ حرارت کی جانچ اور رجسٹریشن۔یہ ساری تدابیر چین-یورپ کے چانگان مال بردار ریل گاڑی کو آسانی سے چلنے میں مدد کریں گی۔چین اور یورپ کے مابین چلنے والی مال بردار ریل چانگان نے جنوری میں 200ٹرپ لگائے جو کہ گزشتہ سال کے اسی دور سے 2.4گنا زیادہ ہے۔وائرس کے پھیلاوٗ سے متاثر ہوکر چانگان انٹرنیشنل فریٹ ٹرین نے اپنے کام سست کردیاہے لیکن اسے کے باوجود یہ روزانہ کی بنیاد پر ایک ٹرپ لگاتی ہے۔

جیسے جیسے کمپنیا ں اپنا کام دوبارہ شروع کررہی ہیں ویسےہی لوگوں کی نقل و حمل بڑھ رہی ہے۔اس وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے ژیان کی حکومت کام پر دوبارہ واپس آنے والی کمپنیوں کو ون آن ون کی خدمات دے رہی ہے،جس میں ابھیں احتیاطی تدابیر کو لاگو کرنے اور عدم پھیلاوٗ میں مدد دی جائے گی جیسے کہ قرنطینہ اورجانچ پڑتال،نیوکلک ایسڈ کی جانچ پڑتال اور ما حولیاتی آلودگی کو روکنا شامل ہیں۔اسی دوران حکومت کا عزم ہے کہ ان کمپنیوں کے ساتھ پوری مدد کرے گی جنھیں افرادی قوت،آمدورفت ،کھانے پینے اور رہائش کے مسائل کا سامنا ہے۔ژیان کی حکومت نے کئی ایسے اقدامات کیے ہیں جس کے ذریعے چھوٹے اور درمیانے درجے کی کمپنیوں کو دوبارہ کام شروع کرنے میں مدد ملے گی۔ان اقدامات میں کرایہ کم کرنا یا اس سے چھوٹ دینا،سود پر امداد کی فراہمی اور مارکیٹ میں کمپنیوں کو جگہ بنانے میں مدد دینا شامل ہیں۔

ژیان مرکزی سطح پر 200ملین یوآن کا ایک خصوصی فنڈ جاری کرے گا جس کے ذریعے مقامی کمپنیوں کو روزگار میں معاونت دی جائے گی اور 1ملین یوآن کا ایک اور فنڈ مقامی کمپنیوں کو ملازمین کی ٹریننگ میں مدد دینے کے لیے جاری کیا جائے گا۔ژیان کی ان کمپنیوں کو خاص امداد دے گا جو اپنے ملازمین کو اپنے خرچے پر بک شدہ گاڑیوں اور ٹرین کی بوگیوں میں منتقل کرے گا،اور ان افراد کو ٹراسپورٹ کے لیے امداد دے گا جو اپنی مرضی سے اپنے کام پر آرہے ہیں ،اور نیوکلک ایسڈ ٹیسٹنگ کے لیے سارا خرچہ دیا جائے گا۔

ذریعہ : ژیان بیورو آف انڈسٹری اینڈ انفارمیشن ٹیکنالوجی