چین کے مینوفیکچرنگ شہر ڈونگ گوان کا مقامی کمپنیوں کی مدد کے لئے اقدامات کا اعلان

ڈونگ گوان ،چین ، 15 فروری ، 2020 / سنہوا- ایشیا نیٹ / – چینی معیشت کے بارے میں پریشانیاں پائی جاتی ہیں کیونکہ ملک کے بہت سے صوبوں نے کچھ کمپنیوں، دکانوں اور فیکٹریوں کی کاروباری سرگرمیوں کو ناول کورونا وائرس(COVID-19) کے پھیلاؤ پر قابو پانے کے لئے مؤخر کردیا ہے۔ تاہم، جنوبی چین کا مینوفیکچرنگ شہر ڈونگ گوان مقامی کمپنیوں کی مدد کے اقدامات کر رہا ہے تاکہ اس وبا سے پیدا ہونے والی مشکلات اور اثرات کو دور کیا جاسکے۔

گآنگڈونگ صوبائی حکومت کے انفارمیشن آفس نے حال ہی میں ایک پریس کانفرنس کی جس میں ڈونگ گوان میں کام کی بحالی کی صورتحال سے آگاہ کیا گیا۔ 10 فروری کی رات تک ، ڈونگ گوان نے4,491 مقامی کاروباری اداروں کے منظم اور کم طلب والے کام کو دوبارہ شروع کردیا ہے، جس میں سے 79.54 فیصد کا تعلق مینوفیکچرنگ انڈسٹری سے ہے۔

ڈونگ گوان کے بیورو آف انڈسٹری اینڈ انفارمیشن ٹکنالوجی کے ڈپٹی ڈائریکٹر لیو جنتانگ نے کہا، “اس وبا سے ڈونگ گوان کی آئندہ کی مجموعی ترقی کو کوئی خطرہ نہیں ہے۔” اس شہر کی صنعت کیاوسط سالانہ شرح نمو 7.4 فیصد ہے، جو گوانگ ڈونگ صوبے کیمتعین پیمانے سے اوپر کی صنعتی کمپنیوں کی ضمنیمالیت کے 13.3فیصد کا احاطہ کرتی ہے، جس میں اعلی درجے کی مینوفیکچرنگ اور ہائی ٹیک مینوفیکچرنگ انڈسٹری کی ضمنی مالیت بالترتیب 54.2 فیصد اور 42.2 فیصد ہے۔ “اعدادوشمار ڈونگ گوان کی معیشت میں لچک اور انسداد خطرے کی صلاحیت کو ثابت کرتے ہیں،” لیو نے مزید کہا۔لیو کے اندازے کے مطابق، یہ وبا اس سال کے پہلے نصف حصے میں، خاص طور پر پہلی سہ ماہی میں ڈونگ گوان کی صنعتی نشوونما پر کافی حد تک منفی اثر ڈالے گی۔ لیکن آئیندہ مدت میں، اس کی مثبت معاشی اساس اور اعلی معیار کی ترقی بغیر کسی تبدیلی کے بدستور رہےگی۔

وبا کے منفی اثرات سے نمٹنے کے لئے، ڈونگ گوان نے مثبت پالیسیوں کا اعلان کیا ہے۔ 7 فروری کو، مقامی کاروباری اداروں کی مدد کے لئے 15 پالیسیاں متعارف کروائی گئیں، جن میں 55 ترجیحی اقدامات شامل ہیں جیسے کہ کرایہمیں چھوٹ یا کرایہ سے نجات، ٹیکس میں کمی، قرض کی منتقلی اور تجدید، صلاحیتوںکی تیاری۔ اس اقدام کا مقصد چھوٹی اور درمیانے درجے کی کمپنیوں کی بحالی میں تعاون کرنا اور کاروباری اداروں پر وبا کے خراب اثرات کو کم سے کم سطح تک لاناہے۔

اندازہ ہے کہ ان اقدامات سے 2.5 ارب یوآن کی مجموعی مالیت کی حامل کمپنیوں کے بوجھ کو آسان کرنے میں مدد ملے گی۔ خاص طور پر، ڈونگ گوان کے ہیومن ریسورس اور سوشل سیکیورٹی بیورو کی جانب سے روزگار کو مستحکم کرنے کے لئے سبسڈی فراہم کرنے کے اقدام سے ان کمپنیوں کے بوجھ کو آسان کرنے میں مدد ملے گی جن کی مجموعی مالیت 168 ملین یوآن ہے۔ اس اقدام سے 190 ہزار سے زائد کمپنیاں اور 1.21 ملین ملازمین مستفید ہوں گے۔

کمپنیوں کو اس طرح کی وبائی صورتحال میں غیر متوقع چیلنجز کا سامنا کرنا پڑتا ہے اور کام دوبارہ شروع کرنے میں تاخیر جیسے کہ مزدوروں کی کمی، ڈونگ گوان میں مینوفیکچرنگ کمپنیوں کے معمول کے آپریشن اور پیداوار پر منفی اثرات مرتب کر رہے ہیں۔

کاروباری اداروں کو مناسب ملازمین کی جلد از جلد بھرتی میں مدد کے لئے، ڈونگ گوان نے ایک آن لائن جاب میلے کا آغاز کیا ہے، جس نے 1,153 کاروباری اداروں میں مجموعی طور پر 83,000 ملازمتوں کی طلب کی اطلاعات جاری کی ہیں۔ وبا کی روک تھام اور کنٹرول کی ضروریات سے متعلق ملازمتوں کی طلب کے لئےایک خصوصی پوسٹ کالم قائم کیا گیا ہے، جوبھرتی کے کام کو بہتر بناسکتا ہے۔

مقامی ایڈورٹائزنگ انڈسٹری کے ایک کاروباری، سونگ کینگ گانگ نے کہا کہ ڈونگ گوان کی جانب سے کاروباری اداروں کی مدد کے لئے جاری کی گئی پالیسیاں جیسے کہ ٹیکس میں کمی اور کرایے میں کمی، بوجھ کو کم کرنے اور مینوفیکچرنگ کاروباری اداروں کو زبردست معاونت فراہم اور حوصلہ افزائی کر رہی ہیں۔

اس کے علاوہ ، ڈونگ گوان نے مقامی مینوفیکچرنگ انڈسٹری خصوصا چھوٹے اور درمیانے درجے کے کاروباری اداروں کی مدد کے لئے بھی بہت سے بروقت اقدامات کیے ہیں۔ 6 فروری کو ، ڈونگ گوان نے مقامی کاروباری اداروں کی مدد کے لئے اپ گریڈ کردہ ایکشن پلان جاری کیا، جس نے شہر کی صنعتی تبدیلی اور اپ گریڈ میں سہولت اور ترقیاتی ماحول کو بہتر بنانے کے لئے، سرمایہ میں اضافے اور پیداوار میں توسیع کے دو پہلوؤں سے دس اقدامات متعارف کروائے۔

دریں اثنا، ڈونگ گوان نے چھوٹے اور درمیانے درجے کے کاروباری اداروں کے لئے اپنی خدمات کی استعدادکو مزید بہتر بنا یا ہے۔ مقامی حکومت کاروباری اداروں سے وابستہ اعدادوشمار کو وسیع پیمانے پر مربوط کرتی ہے، مجموعی وسائل کو زمین، ٹیکنالوجی، سرمائے، ہنر اور دیگر پہلوؤں کے ساتھ مربوط کرتی ہے اور انفارمیشن پلیٹ فارم جسے “کئی گوان جیا” کہتےہیں، کے متعلقہ افعال کو مزید بہتر بناتی ہے۔ آف لائن اور آن لائن اقدامات مشترکہ طور پر خدمات کے معیار کو بہتر بنانے کے لئے ہیں۔ مزید برآں، خدمات کو زیادہ پیشہ ورانہ بنانے کے لئے انٹرپرائز سروس کا ماہر ورکنگ میکانزم خصوصی طور پر تشکیل دیا گیا ہے۔
مقامی حکومت اور کاروباری ادارے اس بارے میں پرامید ہیں اگرچہ اس وباء کے بعد کاروبار متاثر تو ہوں گے۔ لیو کے بقول، “ایک بار وباء پر قابو پا لیا جائے، تو پھر پہلے ہونے نقصانات اور سرمایہ کاری میں تاخیر دُور کی جائے گی، اور ڈونگ گوان کی صنعتی معیشت تلافی بخش نمو دکھائے گی۔” عارضی طور پر دباؤ میں آنے مارکیٹ کی طلبساری صنعتوں کے آرڈرزمیں پوری قوت سے پلٹ کرآسکتی ہے۔

ذریعہ : بیورو آف انڈسٹری اینڈ انفارمیشن ٹکنالوجی ڈونگ گوان

یو کے اے ایس نےاے ابی اے سی کے سینٹر آف ایکسیلنس کے اینٹی برائبری سرٹیفیکیشن پروگرام کے سرٹیفیکیٹ کو تسلیم کرلیا۔

لندن، 12 فروری،2020 /پی آرنیوزوائر/ — اے بی اے سی سینٹر آف ایکسیلنس لمیٹیڈ (®ABAC) نے اعلان کیا ہے کہ یو نائیٹیڈ کنگڈم ایکریڈیشن سروس (یوکےاے ایس) نے اس کے اے بی اے سی کے سرٹیفیکیٹ ISO 37001:2016اینٹی برائبری منیجمنٹ کی منظوری دے دی ہے۔

ABAC® ISO 37001:2016 کا اینٹی برائبری منیجمنٹ سسٹم کے سرٹیفیکیٹ ان تنظیموں کو فراہم کرتا ہے جو رشوت ستانی کے واقعات اور اس کے روک تھام کے لیے اقدامات تجویز کرتے ہیں۔اس کے ساتھ UKAS نے®ABAC کے برطانیہ،ملائیشیا اور دبئی میں بھی ISO 37001:2016اینٹی برائبری منیجمنٹ سسٹم (اے بی ایم ایس) کے سرٹیفیکیٹ کی منظوری دے دی۔یہ سرٹیفیکیٹ ISO/IEC 17021-1: 2015کے مطابق دیا گیاجو ان اداروں کو جو حساب کتاب اورمنیجمنٹ سسٹم کے سرتیفیکیٹ جاری کرتے ہیں۔https://prnewswire2-a.akamaihd.net/p/1893751/sp/189375100/thumbnail/entry_id/1_z7hkgn0f/def_height/400/def_width/400/version/100011/type/1

®ABACکا سرٹیفیکیٹ جن صنعتوں کے لیے تسلیم کیا گیا ہے ان میں بینکاری اور معیشیت،جائیداد اور اس کا لین دین،قانونی خدمات،تعمیراتی کام اور پبلک انتظامات اور معاہدے،توانائی کی پیداوار اور اس کی ترسیل،کان کنی،تیل اور گیس کی سہولیات،فارماسوٹیکل اور صحت عامہ،ٹرانسپورٹ اور ذخیرہ اندوزی شامل ہیں۔

UKASبرطانیہ کی واحد قومی تنظیم ہے جو کہ اس سرٹیفیکیٹ کی منظوری دیتی ہے،اور حکومت کی جانب سے بین الاقوامی طرز کی تجاویز دینے والے ادارے کے طور پر پہچانی جاتی ہے،ان تنظیموں کی طرح جوسرٹیفیکیٹ کی فراہمی،جانچ پڑتال اور اس کے استعمال کا طریقہ کارمتعین کرتی ہے۔UKASکی جانب سے منظوری ABAC کے سرٹیفیکیٹ جاری کرنے کی خدمات میں اس کی غیر جانب داری،اہلیت اوراعلی کارکردگی کا ثبوت ہے۔ UKAS ایک بلامعاوضہ سرٹیفیکیٹ جاری کرنے والی نجی کمپنی ہے اور اس میں حکومت کا کوئی اختیا ر نہیں ہے۔

ABAC®کی سی ای او ظفر انجم کا کہناتھا “ہم شکرگزار ہیں کہ UKAS نے® ABAC کے سینٹر آف ایکسیلنس لمیٹیڈ کو ISO 37001:2016انیٹی برائبری منیجمنٹ سسٹمز کے لیے منظور کرلیا۔ہم جانتے ہیں کہ رشوت کی روک تھام کے لیےاخلاقی اقدار اور نئے قوانین و ضوابط کے ساتھ مطابقت رکھ کر کام کرنا کسی بھی تنظیم کے لیے بہت نازک حیثیت رکھتا ہے۔”

®ABAC کی اسکیم منیجر ہماخالد کا کہناتھا “برطانیہ کی واحد سرٹیفیکیٹ جاری کرنے والی باڈی کی حیثیت سے UKAS کی حمایت ABAC کے سرٹیفیکیٹ جاری کرنے اور اس کے موضوعائی ماہرین اوران کی قابلیت کو جاننے کے لیے ضروری ہے،اور ISO 37001:2016کے سرٹیفیکیٹ جاری کرنے کا ہمارا عمل اعلی اقدار کا ہے۔

ABAC سینٹرکے بارے میں:

انیٹی برائبری-اینٹی کرپشن (اے بی اے سی)کا سینٹر آف ایکسیلنس ایک خود مختار ادارہ ہے جوکہ انیٹی برائبری منیجمنٹ سسٹمز کا سرٹیفیکیٹ جاری کرتاہے۔یہISO 37001:2016کی ٹریننگ اور اور سرٹیفیکیٹ کی منظوری دیتاہے۔®ABACعالمی سطح پر اپنے مصدقہ اخلاقیات اور خوش اخلاق پیشہ ور افراد،قابل ماہرین،معاشی اور کارپوریٹ تفتیش کار،دھوکہ دہی کی نشاندہی کرنے کے مصدقہ جانچ کرنے والے،فارنسک ماہرین اور محاسبوں کے ذریعے اپنا نیٹ ورک چلاتاہے۔®ABAC کے سرٹیفیکیٹ جاری کرنے کے بارے میں مزید جاننے کے لیے ABACgroup.com.پر جائیے۔

رابطہ اے بی اے سی سینٹر آف ایکسیلنس لمیٹیڈ

Omoye Osebor
Client Services Officer
Omoye.osebor@ABACgroup.com
1471 868 207 44+

Logo – https://mma.prnewswire.com/media/1089678/ABAC_Logo.jpg

 

‫ایم جی آئی ڈی صرف 100 فیصد قابل ملاحظہ اشتہارات کے لئے بل کرے گا

نئی دہلی ، 12 فروری ، 2020 / پی آر نیوز وائر۔ ایشیاء نیٹ / — مقامی ایڈورٹائزنگ کے عالمی رہنما ، ایم جی آئی ڈی نے اعلان کیا ہے کہ وہ صرف 100٪ قابل ملاحظہ مقامی ایڈورٹائزنگ پلیسمنٹ ، ساتھ ساتھ مواد کے لئے مشورہ دینے والے ویجٹ کے لئے جو میڈیا ریٹنگ کونسل (ایم آر سی) کی قابل ملاحظہ اشتہار کے بارے میں جانچ کرنے والی گائیڈ لائن کو دیکھنے کے معیار کے بطور استعمال کرتے ہیں، کے لئے خریداروں بل کرے گا۔

“قابل ملاحظہ ہونے کی گائیڈ لائنز http://mediaratingcouncil.org/063014%20Viewable%20Ad%20Impression%20Guideline_Final.pdfhttps://prnewswire2-a.akamaihd.net/p/1893751/sp/189375100/thumbnail/entry_id/0_smaze3qx/def_height/400/def_width/400/version/100031/type/1

وہ ہیں جو قابل ملاحظہ تصویر/خیال کے لئے رہنمائی فراہم کرتی ہیں جو تشہیری تصویری ڈسپلے اور ڈیجیٹل ویڈیو اشتہار کے لئے موجود آئی اے بی کی جانچکاری کی گئیڈلائن فراہم کرتے ہیں۔” انڈسٹری کے ان معیارات کی مدد سے، ایم جی آئی ڈی اپنے اشتہار کی تصویروں پر، جس میں مواد کی سفارشات بھی شامل ہیں، اپنے مؤکلات کو قابل ملاحظہ ہونے کی قیمت کی پیش کش کرسکتی ہے۔

ایم آر سی کے مطابق، جب کسی اشتہار کے 50 فیصد پکسلز براؤزر ونڈو کی قابل ملاحظہ جگہ پر یا فوکس والے براؤزر ٹیب پر رہتے ہیں تو اس اشتہار کے تاثر کو دیکھنے کے قابل شمار کیا جاسکتا ہے۔ براؤزر کے قابل ملاحظہ اشتہار میں جتنے وقت کی تاخیر ہوتی ہے اس کا استعمال تاثرات کی قابلیت کو متعین کرنے کے لئے بھی کیا جاتا ہے۔ ایم جی آئی ڈی پہلے ہی ایم آر سی کے ساتھ مکمل طور پر مطابقت رکھتی ہے، لہذا وہ اپنے صارفین کو ایم آر سی کے معیار کے مطابق 100 فیصد مقامی اشتہار دیکھنے کی ضمانت کی پیش کش میں ایک قدم زیادہ جائے گی۔

ایم جی آئی ڈی گلوبل کے چیف ایگزیکٹو آفیسر سرگئی ڈینیسینکو نے تبصرہ کرتے ہوئے کہا: “ہم کوشش کرتے ہیں کہ اعلی درجے کی دیسی مواد کی سفارشات اور اشتہارات پیش کیے جائیں، اور اس کو ہمارے 100 فیصد قابل ملاحظہ بلنگ ماڈل کی تائید حاصل ہے۔ میڈیا خریداروں کے لئے، ہم اس بات کو یقینی بناتے ہیں کہ وہ تاثرات یا حادثاتی کلکس کی بجائے صرف دیکھے جانے والے اشتہارات کی ادائیگی کریں۔ مزید یہ کہ، چند نقوش کو شمارکرنے کا نتیجہ پبلشروں کے لئے زیادہ بولی کی صورت میں آئےگا، اور اس طرح اونچی سی پی ایم؛ لہذا یہ مقامی نظام کے لئے ایک برابری کا موقع ہے۔ ”

ایم جی آئی ڈی کے بارے میں:

ایم جی آئی ڈی مقامی اشتہار سازی اور مارکیٹنگ کے حل فراہم کرنے میں سرخیل ہے ، جو برانڈز، ایجنسیوں اور ناشروں کو حقیقی اشتہارات کی اصل خرید، فروخت اور ان کے انتظام کے لئے کارکردگی پر مبنی نیٹ ورک پیش کرتا ہے۔ تیز موبائل صفحات کے لئے اپنی سمارٹ ویجیٹ ٹکنالوجی کا آغاز کرنے کے بعد ، ایم جی آئی ڈی کے ایوارڈ یافتہ عالمی نیٹ ورک نے ہزاروں پبلشرز کو ہر روز اربوں مواد کی سفارشات کے ساتھ خدمات انجام دیں۔ کمپنی کی جدید ٹیکنالوجی، صارفین کی خدمت پر مبنی ٹیم اور کارکردگی پر مبنی فلسفہ، معیار کی مستقل فراہمی اور مکمل متعلقہ صارف تجربات میں معاون ہے۔ اس کے نتیجے میں اس کے مشتھرین اور پبلشنگ شراکت داروں کے لئے آنے والے بزنس ، مصروفیت اور محصول میں اضافہ ہوتا ہے۔ 2007 میں قائم کی گئی، ایم جی آئی ڈی کا صدر دفتر لاس اینجلس میں ہے، جس کے یورپ اور اے پی اے سی میں اضافی دفاتر بھی ہیں۔

مزید معلومات کے لئے وزٹ کیجیے www.MGID.com ۔

لوگو: https://mma.prnewswire.com/media/772886/MGID_Logo.jpg

ذریعہ : ایم جی آئی ڈی

 

‫محمد بن راشد گلوبل واٹر ایوارڈ کے دوسرے دور میں یوتھ – انّوویٹیو انڈویزول ایوارڈ (Innovative Individual Award) سے پاکستانی شہری مشترکہ طور پر سرفراز ہوا

دبئی (DUBAI)، متحدہ عرب امارات (UAE)، 6 فروری، 2020 /پی آر نیوز وائر/ — محمد بن راشد المکتوم گلوبل واٹر ایوارڈ کے دوسرے دور کے یوتھ ایوارڈ زمرے کے انوویٹیو انڈویزول ایوارڈ کے لئے پاکستان سے تعلق رکھنے والے ڈاکٹر محمد وکیل شہزاد مشترکہ طور پرفتحیاب قرار دئیے گئے ہیں۔ دبئی میڈیا کونسل کے چیئرمین عزت مآب شیخ احمد بن محمد بن راشد المکتوم نے دبئی میں منعقدہ ایک خصوصی تقریب میں کامیاب قرار پائے افراد کو اعزاز سے سرفراز کیا ہے۔https://prnewswire2-a.akamaihd.net/p/1893751/sp/189375100/thumbnail/entry_id/1_m12atm4u/def_height/400/def_width/400/version/100011/type/1

ڈاکٹر شہزاد نے مشترکہ طور پر انوویٹیو انڈویزول ایوارڈ – یوتھ ایوارڈ کے لئے کامیابی حاصل کی۔ ایوارڈ کی مالیت 20,000 امریکی ڈالر ہے۔ اُن کا پروجیکٹ، ‘7/24 سولرڈسایلینیشن'(’24/7 Solar Desalination’) نمکینیت کودورکرنے والی ایک ایسی ہائبرڈ سائیکل ہے جو ایم ای ڈی کی عملیاتی حدود پر قابو پانے کے لئے روایتی ملٹی – افیکٹ ڈسٹلیشن (MED) نظام کے ساتھ ایڈسورپشن (AD) سائیکل کو مشترک کردیتی ہے۔ ہائبرڈ ایم ای ڈی اے ڈی (MEDAD) سائیکل سے پانی کی پیداوار روایتی ایم ای ڈی کے بالمقابل 2 سے 3 گنا زیادہ ہے۔ اس ٹیکنالوجی میں شمسی توانائی یا ضائع ہونے والی حرارتی توانائی استعمال ہوتی ہے۔

“متحدہ عرب امارات نوجوانوں کی صلاحیتیں بڑھانے کو بہت اہمیت دیتا ہے اور انھیں اقوام متحدہ کے پائیدار ترقیاتی اہداف (SDGs) 2030 کے حصول میں مصروفِ عمل کرتا ہے۔ یہ کارہائے نمایاں متحدہ عرب امارات کے نائب صدر اور وزیر اعظم نیز دبئی کے حکمراں عزت مآب شیخ محمد بن راشد المکتوم کی مدبرانہ قیادت کے عین مطابق انجام پارہاہے۔ متحدہ عرب امارات سے آنے والے دنیا بھر کے لاکھوں افراد کی زندگیوں کو بہتر بنانے کے لئے یہ ایوارڈ تحقیقاتی مراکز، افراد اور اختراع کنندگان کی حوصلہ افزائی کرتا ہے۔ ایوارڈ کے گزشتہ دو ادوار کے دوران درخواستوں کی کثیر تعداد دیکھ کر ہم خوش ہیں۔ اس ایوارڈ کے توسط دنیا بھر کے تخلیقی ذہنوں کے لئے اختراعی پلیٹ فارم اور ایک انکیوبیٹر کے طور پر متحدہ عرب امارات کے کردار پر زور دیا گیا ہے،”مذکورہ باتیں سکیا کے بورڈ آف ٹرسٹیز کے چیئرمین ایچ ای سعید محمد الطائر نے کہیں۔https://prnewswire2-a.akamaihd.net/p/1893751/sp/189375100/thumbnail/entry_id/1_7ae06wam/def_height/400/def_width/400/version/100011/type/1

متحدہ عرب امارات میں پاکستان کے سفیر عزت مآب غلام دستگیر نے ڈاکٹر محمد وکیل شہزاد کو مبارکباد پیش کیا۔ سفیر نے مزید کہا کہ ان کا یہ اختراعی پروجیکٹ آبی وسائل سے متعلق انتظام کے نظام میں ایک اہم عطیہ ہے۔ انھوں نے یہ امید ظاہر کی کہ ڈاکٹر شہزاد کے پروجیکٹ سے سماج کو پانی کے بہتر اور موثر حل کو کام میں لانے کا حوصلہ ملے گا۔

یہ ایوارڈ – مجموعی طور پر 10 ملین امریکی ڈالر کے انعام کے ساتھ ہی – شمسی توانائی استعمال کرکے پانی کی قلت اور آلودگی کے لئے پایۂ دار اور اختراعی حل تلاش کرنے والےدنیا بھر کے تحقیقی مراکز، افراد اور اختراع کنندگان کی حوصلہ افزائی کرتا ہے۔ ایوارڈ کے تین زمرے ہیں: انّوویٹیو پروجیکٹس ایوارڈ، انّوویٹیو ریسرچ اینڈ ڈویلپمنٹ ایوارڈ، انّوویٹیو انڈویزول ایوارڈ۔

ویڈیو https://we.tl/t-9AvYStSmwL

ویڈیو –
https://mma.prnewswire.com/media/1086612/Mohammed_bin_Rashid_Al_Maktoum_Global_Water_Award.mp4

تصویر –https://mma.prnewswire.com/media/1086673/Mohammed_bin_Rashid_Al_Maktoum_Global_Water_Award.jpg

لوگو – https://mma.prnewswire.com/media/1083707/UAE_Water_Aid_Foundation_Suqia_Logo.jpg

روٹری قائدین کے ایک بین الاقوامی وفد کا پولیو کےخاتمہ میں تعاون کے لیے پاکستان کا دورہ

وزیر اعظم عمران خان،وزیرصحت ظفر مرزااور دیگر پاکستانی قیادت سے ملاقاتوں کا محور ملک میں پولیو کے خاتمے کے لیے پاکستان کے ازسرنو کوششیں رہیں

اسلام آباد، 6 فروری 2020 /پی آرنیوزوائر/ –دنیا بھر سے روٹری انٹرنیشنل کے قائدین کا ایک وفدرواں ہفتےپاکستان کے حکومتی ارکان سےملاقات کے لیے پاکستان تشریف لایا۔اور حکومتی قیادت بشمول وزیراعظم پاکستان عمران خان،وزیر صحت ڈاکٹر ظفر مرزا،چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ اور پاکستان کے پولیو کے نیشنل ایمرجنسی آپریشنزسینٹر کے سربراہ ڈاکٹر رانا صفدر سے ملاقاتیں کیں۔

روٹری انٹرنیشنل کے وفدمیں روٹری انٹرنیشنل کے صدر2020-21 ہولگر ناک ،روٹری فاوٗنڈیشن کےٹرسٹی صدر 2020-21 کے آر روی رویندرن اور روٹری کے انٹرنیشنل پولیو پلس کمیٹی کے صدر مائکل کے میک گورن شامل تھے۔اس گروپ کے ہمراہ روٹری فاوٗنڈیشن کے متوقع ٹرسٹی عزیز میمن بھی تھے،جوکہ روٹری کے پاکستان پولیو پلس پروگرام کی جدوجہد کی قیادت کر رہے ہیں۔https://prnewswire2-a.akamaihd.net/p/1893751/sp/189375100/thumbnail/entry_id/1_tojwm134/def_height/400/def_width/400/version/100011/type/1

حکومتی قیادت نے روٹری کے انسدادپولیو مہم میں نمایاں کردار ادا کرنے اور پاکستان اورپولیوسے متاثرہ دوسرےممالک کو اہم مالی امداد دینےپر روٹری کی خدمات کو سراہا۔روٹری کے ممبران نے 2.1ملین ڈالرزسےزائدانسداد پولیو مہم پر لگائے ہیں اور رضاکارانہ طور پرلاتعداد گھنٹوں پر محیط وقت صرف کیا۔

عالمی سطح پر پولیو کے خاتمہ کی مہم کی ابتدا کا سہرا جس کے سرہے، روٹری وہ تنظیم ہے ۔جب روٹری نے 1988میں گلوبل پولیو ایراڈیکیشن انیشییٹیو(جی پی ای آئی)کو قائم کیا تواس وقت دنیا بھر میں سالانہ پولیو کے 350,000کے کیسزتھے۔آج روٹری ،اس کے حصہ داروں اور عالمی حکومتوں کے اقدامات کی وجہ سے پولیو کے کیس99.9فیصد تک کم ہوگئے ہیں۔

رواں ہفتے کی ملاقاتوں میں ،وزیراعظم نے پاکستان میں پولیو کے خاتمے کے لیے کوششوں میں درپیش حالیہ مشکلات کو تسلیم کیا اور یقین دلایا کہ پاکستان کی سب سے بڑی ترجیحات میں پولیو کا خاتمہ بھی شامل ہے۔حکومت پاکستان نے اس سے پہلے مسلسل موثر اقدامات کرکے پولیوویکسین پروگرامکو منظم کیااور اس کے لیے ضروری وسائل فراہم کیےتاکہ اس بات کو یقینی بنایاجائےکہ پاکستان میں دوبارہ پولیو کے پھیلاؤکو ررکا جاسکے۔جنرل باجوہ نے روٹری کے وفد کو افواج اور سول اداروں کے مستحکم امداد اور معاونت کایقین دلایا تاکہ پاکستان کی ہر برادری کے ہر بچے تک پولیوویکسین کی رسائی یقینی بنائی جاسکے۔

پاکستا ن کے وزیرصحت ڈاکٹرظفرمرزا نے پاکستان میں انسداد پولیو مہم میں بہتری کے اقدامات کی تصدیق کرتے ہوئے بتایاکہ پچھلی قومی انسداد پولیو مہم میں تقریباَ40ملین بچوںکو پولیو کے قطرے پلائےگئے۔

جناب ہولگر ناک نے حکومت پاکستان کے انسداد پولیو کے اقدامات اوراپنے دورے پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا “ہم شکرگزارہیں کہ پاکستان کی اعلی قیادت کےسا تھ ملاقات کا موقع ملا اوران سے یہ معلوم ہوا کہ پاکستان پولیو کے خاتمے کے لیے تجدیدی کوششیں کررہاہےتاکہ اس بیماری کا ہمیشہ کے لیے خاتمہ ہو پائے۔ہمیں یقین ہے کہ حکومت اور افواج پاکستان کی مدد سے پاکستان یہ کر گزرےگا۔”

جناب کے آر روی رویندرن نے بھی یہ کہتے ہوئے اتفاق کیا، “انسداد پولیو ایک ایسا بڑا مقصد ہے جس کے لیے ضروری ہے کہ معاشرےکے تمام عناصرباہم مل جائیں اورہم اپنے اس حتمی مقصد کے لیے کام کریں کہ کبھی بھی کوئی بچہ پولیو کی وجہ سے معذور نہ ہو۔”

اپنے اس دورے میں،روٹری کے وفد نے روٹری پاکستان کے مقامی قائدین سے ملاقاتیں کیں ،یہاں پر روٹری کے 230سے زائد کلب اور تقریباَ3400روٹری ممبران ہیں۔انھوں نے جی پی ای آئی کے کچھ بڑے معاونین سے بات چیت کی،اور نیشنل ایمرجنسی آپریشنز سینٹر کا دورہ کیا ،جہاں پر ایک ہائی ٹیکنالوجی ڈیٹا کلیکشن سسٹم کے ذریعے پولیو مہم کے عمل کی نگرانی کی جاتی ہے۔

اگرچہ صرف افغانستان اور پاکستان ہی میں پولیو وائرس کے کیسز رپورٹ ہو رہے ہیں ،لیکن اس کے ساتھ عالمی سطح پر بھی پولیو کے خاتمے میں درپیش مسائل ،جیسے کہ بچوں تک رسائی میں دشواری کاسامنا جس کے ساتھ غیر محفوظ اور کشیدہ حالات اور خراب نظام صحت سب سے زیادہ مشکل ثابت ہوئے ہیں۔ان رکاوٹوں کو دور کرنے اور یہ یقینی بنانے میں کہ کہ پرووگرام چلتا رہے،عالمی حکومتوں اور معاونیں کی معاونت اور امداد ناگزیر ہیں۔

کوئی بھی فرد پولیو کے خاتمے کی اس لڑائی میں شریک ہو سکتا ہے اور اپنی امدادBill & Milenda Gates Foundation کے ذریعے

Rotary matched 2-to-1 کو دے سکتاہے۔مزید معلومات کے لیے endpolio.org پر جائیے اور امداد دیجیئے۔

روٹری کے بارے میں:

روٹری عالمی سطح پر رضاکارقیادتوں کومجتمع کرتاہے جن کا مقصد دنیا بھر میں انسانی آزمائشوں سے نمٹنا ہے۔ہم دنیا کے تقریباَہر ملک میں موجود35,000سے زائد روٹری کلب کے 1.2ملین افراد کو باہم ملاتے ہیں۔یہ افراد برادریوں میں لوگوں کی مدد سے لے کر پولیو کے خاتمے تک خدمات دیتے ہیں تاکہ پولیو سے پاک ایک دنیا ہو اور اس طرح کہ لوگ مقامی اور بین الاقوامی سطح پر زندگیوں میں بہتری لاتے ہیں۔

مزید معلومات کے لیے اور روٹری کے پولیو کے خاتمے کے لیے اس کے کوششوں کے بارے میں جاننے کے لیےRotary.org اور endpolio.org پر جائیے۔

تصویر : https://mma.prnewswire.com/media/1087114/Holger_Knaack_and_Imran_Khan.jpg

‫کیمین نے کیمین ایکواسائنسز™ کے صدر کے لئے لیوژئی لئی کا نام دے دیا

ژئی لئی بحیثیت صدر کارپوریٹ قیادت میں تبدیلی کی حکمت عملی کے تحت کمپنی کا نیا جدید بزنس یونٹ سنبھالیں گے

شنگھائی، 03 فروری، 2020 / پی آر نیوز وائر/ — کیمین انڈسٹریز، تغذیہ تیار کرنے والا ایک عالمی ادارہ جو دنیا کے 80 فیصد کے لئے اپنی مصنوعات اور خدمات کے ساتھ روزمرہ کی زندگی کے معیار کو مستقل طور پر تبدیل کرنے کے لئے کوشاں ہے، نے لیوژئی لئی کو کیمین ایکواسائینز™ (کمپنی کا عالمی بزنس یونٹ جو مچھلی اور کیکڑے کے کھلے پانی کے شکار سے فارم کی جانب منتقل ہوتی ہوئی ایکواکلچر کی صنعت کو پائیدار حل کے ساتھ خدمات فراہم کرتا ہے ) کا صدر مقرر کردیا ہے۔ ژی لئی کیمین ایکوا سائنس کے پہلے صدر کے پی فلپ کی جگہ سنبھال رہے ہیں، جو کیمین انڈسٹریز کے لئے اسٹریٹجک منصوبوں کی قیادت کرتے رہیں گے۔https://prnewswire2-a.akamaihd.net/p/1893751/sp/189375100/thumbnail/entry_id/0_0cpd3ybd/def_height/400/def_width/400/version/100012/type/1

ژئی لئی نے 2018 کے آخر میں، کیمین ایکوا سائنسز کے چیف کمرشل آفیسر کی حیثیت سے شمولیت اختیار کی۔ انہوں نے چین کے علاقائی ڈائریکٹر کے طور پر بھی خدمات انجام دیں، اور وہاں کیمین ایکواسائنسز کے کاروبار کی نیچے سے اوپر کی جانب تعمیر کی۔

ڈاکٹر کرس نیلسن، صدر اور سی ای او کیمین نے کہا، “لیو نے کیمین ایکوا سائنسز میں اس وقت شمولیت اختیار کی جب یہ ابھی شروع ہی ہوئی تھی، اور وہ پہلے دن سے ہی ایک اثاثہ اور کاروبارمیں ایک رہبر رہا ہے۔ کے پی نے ہمارنئے عالمی بزنس یونٹ کے لئے ایک مضبوط بنیاد تیار کی ہے، اور میں لیو کی قیادت میں کیمین کو ایکواکلچر کی صنعت میں تسلسل سے آگے بڑھتا دیکھنے کے لئے بہت پرجوش ہوں۔”

ژئی لئی نے گزشتہ دہائی کو تغذیہ اور خوراک کی صنعت میں قائدانہ عہدوں پر گزارا ہے۔ کیمین میں شامل ہونے سے پہلے، انہوں نے رائل ڈی ایس ایم این وی کے فوڈ اسپیشلٹی بزنس گروپ کے ایشیاء پیسیفک کے صدر کی حیثیت سے خدمات انجام دیں۔ وہ ڈی ایس ایم کے ساتھ ایشیاء پیسیفک کے علاقے، یورپ اور چین میں متعدد سینئر عہدوں پر بھی فائز رہے۔

ژی لئی نے کہا، ” کیمین ایکواسائینز™ کے آغاز سے ہی ٹیم کا حصہ بننا ایک زبردست تجربہ رہا ہے، اور میں اس شاندار عمل کو جاری رکھنے کا خواہاں ہوں کیونکہ ہم اپنی مصنوعات کے پورٹ فولیو اور عالمی رسائی کو وسعت دے رہے ہیں۔”https://prnewswire2-a.akamaihd.net/p/1893751/sp/189375100/thumbnail/entry_id/1_pkpt280b/def_height/400/def_width/400/version/100011/type/1

زئی لئی نے بیچلر کی ڈگری چین کی شنگھائی یونیورسٹی سے حاصل کی اور نیدرلینڈز کی آر ایس ایم ایریسمس یونیورسٹی سے ایم بی اے کیا۔ وہ آجکل شنگھائی میں مقیم ہیں اور چین سے کیمین ایکواسائینز™ کی قیادت جاری رکھیں گے۔

کیمین انڈسٹریز کے بارے میں

کیمین انڈسٹریز (www.kemin.com) تغذیہ تیار کرنے والا ایک عالمی ادارہ ہے جو دنیا کے 80 فیصد کے لئے اپنی مصنوعات اور خدمات کے ساتھ روزمرہ کی زندگی کے معیار کو پائیدارطور پر تبدیل کرنے کے لئے کوشاں ہے۔ کمپنی انسانوں اور جانوروں کی صحت اور تغذیہ، پالتو جانوروں کی خوراک، ایکوکلچر، نٹراسیوٹیکل، فوڈ ٹکنالوجیز، فصلوں کی ٹکنالوجیز اور ٹیکسٹائل کی صنعتوں کے لئے 500 سے زیادہ مخصوص غذائی اجزا فراہم کرتی ہے۔

نصف صدی سے زائد عرصہ سے، کیمین صنعت سے متعلق چیلنجوں سے نمٹنے اور 120 سے زیادہ ممالک میں صارفین کو عملی سائنس کا استعمال کرتے ہوئے مصنوعاتی حل پیش کرنے کے لئے مصروف عمل ہے۔ کیمین خوراک، فیڈ اور صحت سے متعلق مصنوعات کے معیار، حفاظت اور افادیت کے اپنے عزم کے ساتھ بڑھتی آبادی کو کھلانے کے لئے غذائی اجزاء مہیا کرتا ہے۔

1961 میں قائم کی گئی، کیمین نجی ملکیت میں ہے، خاندانی ملکیت میں قائم اور چلنے والی کمپنی ہے، جس کے 90 ممالک میں 2،800 سے زیادہ عالمی ملازمین اور کاروبارہیں جن میں بیلجیئم، برازیل، چین، ہندوستان، اٹلی، روس، سان مارینو، سنگاپور، جنوبی افریقہ اور ریاستہائے متحدہ امریکہ میں صنعتکاری کے ادارے شامل ہیں۔

میڈیا کا رابطہ: ونود کمار آر، کمیونیکیشن منیجر، Vinothkumar.R@kemin.com، +91 99529 50735

© کیمین انڈسٹریز، انکارپوریشن اور اس کی کمپنیوں کا گروپ 2020۔ جملہ حقوق محفوظ ہیں۔ ® TM کیمین انڈسٹریز، انکارپوریشن، یو ایس اے کے ٹریڈ مارکس۔ کچھ بیانات، پروڈکٹ لیبلنگ اوردعوے جغرافیائی لحاظ سے یا حکومتی تقاضوں کے مطابق مختلف ہوسکتے ہیں۔

تصویر- https://mma.prnewswire.com/media/1083245/Leo_Xie_Li_headshot.jpg
لوگو – https://mma.prnewswire.com/media/901853/New_Kemin_Logo.jpg