اوسلو 2022سرمئی اولمپک کی میزبانی سے دست بردار

بیجنگ:ناروےجن شہر اوسلو 2022سرمئی اولمپک گیمز کی میزبانی سے دست بردار ہوگیا۔ناروے کی حکومت کی جانب سے مالی معاونت سے انکار پر اوسلو میں شہر سرمئی اولمپک گیمز کی میزبانی سے دست بردار ہوگیا۔ناروے کی اس فیصلے کے بعد چین کا شہر بیجنگ اور قازکستان کا شہر الماتے کے درمیان میزبانی کا مقابلہ ہوگا۔اوسلو چوتھا شہر ہے جو اخراجات کے باعث سرمئی گیمز کی میزبانی سے دست بردار ہواہے ، واضح رہے 2014سوچی سرمئی اولمپک میں 51بلین ڈالر کے اخراجات آئے تھے جس کے بعد سویڈن کا اسٹاک ہام،پولینڈ کا کراکواور یوکرین کا شہر لیویو نیلامی سے دست بردار ہوگئے تھے۔ناروے کے وزیر اعظم کا کہنا ہے کہ 5.4بلین ڈالر سے زائد مالی اخراجات برداشت نہیں کئے جاسکتے ہیں۔انٹرنیشنل اولمپک کمیٹی نے اپنے پیغام میں ناروے کے نیلامی سے دستبر داری کے فیصلے پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔آئی او سی کے ایگزیکٹو ڈائرکٹر کاناروے کے فیصلے پر کہنا تھا کہ اس فیصلے سے ملک اور شہر دونوں نے ایک موقع ضائع کردیا، انھوں نے کہا کہ ناروے اسپانسر شپ کی مد میں حاصل ہونے والی 880ملین ڈالر کی رقم بھی ضائع کردی ہے جبکہ اولمپک کمیٹی ٹی وی نشریات سے حاصل ہونے والی آمدنی بھی میزبان ملک کو فراہن کرے گی۔انٹرنیشنل اولمپک کمیٹی 31جولائی 2015کو ملائیشیا کے دارالحکومت کوالالمپور میں میزبان شہرکا تعین کرے گی۔